بائیکاٹ کی دھمکیوں کے باوجود انتخابات وقت پر ہونگے: باخبر ذرائع

  • نااہل نواز شریف کی لندن میں میڈیا سے گفتگو ،سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی و دیگر ن لیگی رہنماﺅں کے بیانات سے یہ نتیجہ اخذ کر نا قطعاً مشکل نہیں کہ وہ اپنی شکست فاش کے خوف سے انتخابات کو متنازعہ بنا کر راہ فرار اختیار کرنا چاہتے ہیں اور اس سلسلے میں قومی اداروں بالخصوص فوج اور عدلیہ کو تسلسل سے تنقید کا نشانہ بنا رہے ہیں
  • نوازشریف کی جانب سے الیکشن کے لئے رکھی گئی تینوں شرائط مسترد کرتے ہیں، شرائط جمہوریت کو بدنام اور ڈی ریل کرنے کی سازش ہیں، نواز شریف کے بیانیے کے برعکس کوئی جماعت الیکشن سے دستبردار ہونے کو تیار نہیں، حتیٰ کہ ان کا بھائی شہباز شریف بھی متفق نہیں، پی ٹی آئی رہنما شاہ محمود قریشی

الیکشن کمیشناسلام آباد( الاخبار نیوز) مسلم لیگ ن کی جانب سے انتخابات کے بائیکاٹ کی خبر آنے کے بعد سیاسی حلقوں میں نئی بحث چھڑ گئی ، لندن میں کیا کھچڑی پک رہی ہے؟ ن لیگ کی حکمت عملی اور انتخابی سیاست کا مستقبل کیا؟ ، سنجیدہ حلقوں میں چہ میگوئیاں شروع ہوگئیں۔ نااہل وزیر اعظم نواز شریف کی لندن میں میڈیا سے گفتگو ،سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی و دیگر ن لیگی رہنماﺅں کے بیانات سے یہ نتیجہ اخذ کر نا قطعاً مشکل نہیں کہ وہ انتخابات کو متنازعہ بنا کر ان سے فرار حاصل کرنا چاہ رہے ہیں اس سلسلے میں قومی اداروں بالخصوص فوج اور عدلیہ کو تسلسل سے تنقید کا نشانہ بنا رہے ہیں، تاہم موقر ذرائع نے ”الاخبار“ سے بات چیت کرتے ہوئے مکمل ذمہ داری سے اس بات کی وضاحت کی کہ شفاف ،غیرجانبدارانہ اور بروقت انتخابات کا انعقاد بہرطور ممکن بنایا جائے گا کیونکہ ملک کے مستقبل کیلئے یہ انتخابات انتہائی اہمیت کے حامل ہیں اور ان کے انعقاد میں کسی بھی قسم کی تاخیر ناقابل تلافی نقصان کا باعث بن سکتی ہے ذرائع کے مطابق نااہل وزیر اعظم نواز شریف اور ان کے رفقاء کی ہر ممکن کوشش کے انتخابات کو متنازعہ بنایا جائے اور کسی نہ کسی طریقہ سے تاخیر کی راہ پر ڈال دیا جائے ناکام رہے گی۔ ادھر تحریکِ انصاف کے رہنما مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ مسلم لیگ ن کے جن لوگوں نے ٹکٹیں واپس کی ہیں وہ جی ٹی روڈ کے بیانیے سے متفق نہیں، چودھری نثار نے بھی ان سے راہیں جدا کر لی ہیں۔ شاہ محمود قریشی کہتے ہیں نوازشریف کی جانب سے الیکشن لڑنے کے لئے رکھی گئی تینوں شرائط مسترد کرتے ہیں، کوئی جماعت الیکشن سے لاتعلق ہونے کو تیار نہیں، سیاسی عدم استحکام کی کوشش نہ کی جائے۔ انہوں نے کہا کہ نواز شریف کی الیکشن لڑنے کی تینوں شرائط جمہوریت کو بدنام اور ڈی ریل کرنے کی سازش ہیں، ہم نہیں سمجھتے کہ نواز شریف اس قسم کے فیصلوں سے ملک کی خدمت کر رہے ہیں ان کا کہنا تھا کہ نواز شریف کے بیانیے کے برعکس کوئی جماعت الیکشن سے دستبردار ہونے کو تیار نہیں، حتیٰ کہ ان کا بھائی شہباز شریف جو پارٹی کا صدر ہے۔ پاکستان تحریک انصاف کے رہنماء فواد چوہدری اور اسد عمر نے ن لیگ پر باو¿نسرز برسادیئے، کہا نواز شریف فوج اور آئی ایس پر الزامات لگارہی ہے، ن لیگ کے فوج مخالف بیانیے کو مسترد کرتے ہیں۔وہ کہتے ہیں کہ نواز شریف اور مریم نواز الیکشن کو متنازع بنا رہے ہیں، لگتا ہے مسلم لیگ ن انتخابات کا بائیکاٹ کردے گی، بائیکاٹ کرنا ن لیگ کا جمہوری حق ہے۔ن لیگ کے امیدوار رانا سراج اقبال نے گزشتہ دنوں اپنے گودام پر چھاپہ مارنے والی ٹیم کو حساس ادارے کا قرار دیا تھا تاہم اگلے ہی دن انہوں نے اپنے ویڈیو پیغام میں واضح کیا کہ محکمہ زراعت کی ٹیم نے میرے گودام پر چھاپہ مارا تھا۔

Scroll To Top