جب تک کرپشن کا خاتمہ نہیں ہو گا، ملک ترقی نہیں کر سکتا: سراج الحق

  • کرپٹ عناصر کو 25 جولائی کے بعد جیل کا راستہ دیکھائیں گے،چیف جسٹس عوام کو انصاف دینا چاہتے ہیں تو قرآن کو قانون بنائیں
  • چوروں اور لٹیروں نے ملک کو تباہ کردیا، حکمران پاکستان میں کم برطانیہ میں زیادہ رہتے ہیں، امیر جماعت اسلامی

سراج الحقلاہور(الاخبار نیوز) امیر جماعت اسلامی سراج الحق نے کہا ہے کہ چیف جسٹس عوام کو انصاف دینا چاہتے ہیں تو قرآن کو قانون بنائیں، چیف جسٹس میاں ثاقب نثار کی تعریف کرتا ہوں جنہوں نے مظلوموں کی بات کی۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا، سراج الحق کا کہنا تھا کہ 25 جولائی کو متحدہ مجلس عمل کامیاب ہوگی، لوگ ہمارے ساتھ کھڑے ہیں قوم کا لوٹا ہوا پیسہ ملک واپس لائیں گے۔انہوں نے کہا کہ ایک ایک پیسہ نکال کر قومی خزانے میں جمع کرائیں گے، کرپٹ عناصر کو 25 جولائی کے بعد جیل کا راستہ دیکھائیں گے، لسٹیں موجود ہیں کہ کس نے پیسہ کتنا اور کہاں سے کھایا ہے۔ امیر جماعت اسلامی کا کہنا تھا کہ پاناما لیکس کیس میں 111 دن سپریم کورٹ گیا، ہم ملک کو ترقی یافتہ دیکھنا چاہتے ہیں، ایسی ریاست ہونی چاہیے جس میں اللہ کا قانون ہو، ہم خطے کو حقیقی معنوں میں اسلام کو گہوارہ بنائیں گے۔ان کا کہنا تھا کہ ایسا نظام چاہتے ہیں جس کے ذریعے تعلیم عام ہوجائے، لوگوں کو بنیادی حقوق ملے، بہتر روزگار عوام کو میسر ا?ئے، لیکن المیہ یہ ہے کہ ا?ج چوروں لٹیروں نے ملک کو تباہ کردیا ہے۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ حکمران پاکستان میں کم برطانیہ میں زیادہ رہتے ہیں، ملک سے جب تک کرپشن کا خاتمہ نہیں ہوگا اس وقت تک ملک ترقی نہیں کرسکتا۔

Scroll To Top