نااہل وزیر اعظم کاملکی سلامتی کیخلاف انٹرویو: نواز شریف ،شاہد خاقان عباسی آج عدالت طلب

  • اظہر صدیق ایڈووکیٹ کی درخواست میں کہا گیا ہے کہ سابق وزیرِاعظم نواز شریف کا سرل المیڈا کو انٹرویو ملک و قوم سے غداری کی زمرے میں آتا ہے لہٰذاآرٹیکل 6 کے تحت کارروائی عمل میں لائی جائے،جسٹس مظاہر علی اکبر نقوی کی سربراہی میں 3 رکنی فل بنچ کا فریقین کو وضاحت کیلئے پیش ہونیکا تحریری حکم
  • نواز شریف عوامی عہدے پر فائز رہ چکے ہیں، ان کا انٹرویو سنجیدہ معاملہ ہے، نواز شریف اور ایم کیو ایم چیف الطاف حسین کے بیانات میں کافی مماثلت پائی جاتی ہے، گرے لسٹ میں پاکستان کے نام کی شمولیت بھی یہی انٹرویو ہے ، معروف ایڈووکیٹ و پی پی پی رہنما لطیف کھوسہ کی نجی ٹی وی سے بات چیت

نواز شریف ،شاہد خاقان عباسی آج عدالت طلب

لاہور ( الاخبار نیوز) لاہور ہائیکورٹ نے نواز شریف اور شاہد خاقان عباسی کیخلاف بغاوت کی کارروائی کے لیے درخواست پر تحریری حکم جاری کر دیا ہے۔جسٹس مظاہر علی اکبر نقوی کی سربراہی میں 3 رکنی فل بنچ نے تحریری حکم جاری کیا۔ فل بنچ نے سابق وزرائے اعظم نواز شریف اور شاہد خاقان عباسی کو 29 جولائی کو طلب کرتے ہوئے حکم دیا ہے کہ دونوں فریق پیش ہو کر اپنی پوزیشن واضح کریں۔یہ درخواست ایڈووکیٹ اظہر صدیق کی جانب سے دائر کی گئی تھی۔ یہ درخواست سابق وزیرِاعظم نواز شریف کے متنازع بیان کو بنیاد بنا کر دائر کی گئی ہے۔درخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ نواز شریف نے متنازع انٹرویو دے کر ملک و قوم سے غداری کی، اس لیے ان کیخلاف بغاوت کے الزام کے تحت کارروائی کی جائے۔ درخواست میں کہا گیا کہ شاہد خاقان عباسی نے قومی سلامتی کمیٹی کی کارروائی سابق وزیرِاعظم کو بتا کر حلف کی پاسداری نہیں کی۔ سابق وزرائے اعظم کیخلاف آئین کے آرٹیکل چھ کے تحت کارروائی کی جائے۔ دریں اثناء پی پی پی رہنما سردار لطیف کھوسہ نے اے آر وائی سے بات چیت کرتے ہوئے کہا ہے کہ نواز شریف عوامی عہدے پر فائز رہ چکے ہیں، ان کا انٹرویو سنجیدہ معاملہ ہے، نواز شریف اور ایم کیو ایم چیف الطاف حسین کے بیانات میں کافی مماثلت پائی جاتی ہے، گرے لسٹ میں پاکستان کے نام کی شمولیت بھی یہی انٹرویو ہے ۔

Scroll To Top