سچ کیا ہے؟ بم سے اُڑا دینے والی خبر یا شہباز شریف کو بیل آﺅٹ کرنیکا فیصلہ؟

  • پنجاب میں کمپنیز سکینڈل میں اربوں روپے کی بدعنوانی ہوئی ،بعض لوگ پیش ہونے میں توہین سمجھتے ہیں، نیب ہیڈکوارٹرز کو بارود سے اڑا دینے کی دھمکی کے باوجود بدعنوان عناصر کیخلاف جہاد بلا تفریق جاری رہے گا، جسٹس (ر) جاوید اقبال کا لاہور آفس میں منعقدہ تقریب سے خطاب
  • شہباز شریف صاف پانی کرپشن کیس میں طلبی کے باوجود قومی احتساب بیورو میں پیش نہ ہوئے ، ن لیگ کے صدر کو انتخابات تک دوبارہ نہ بلانے کا فیصلہ ، اسی کیس میں حمزہ شہباز، علی عمران ، عائشہ غوث پاشا، وحید گل بھی نیب کے روبرو پیش ہو کر تحقیقات کا سامنا کر چکے ہیں
لاہور:۔ سابق وزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف سپریم کورٹ رجسٹری لاہور میں پیشی کیلئے آ رہے ہیں

لاہور:۔ سابق وزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف سپریم کورٹ رجسٹری لاہور میں پیشی کیلئے آ رہے ہیں۔فائل فوٹو

لاہور ( این این آئی) قومی احتساب بیورو کے چیئرمین جسٹس (ر) جاوید اقبال نے کہا ہے کہ میگا کرپشن کیسز فائلوں سے نکالا ،نیب ہیڈکوارٹر کو بارود سے اڑانے کی دھمکی دی گئی مگر اللہ اور رسول کے علاوہ کسی سے نہیں ڈرتا،آنے والے دنوں میں میگا کرپشن کیسز کے اکثر مقدمات ریفرنس کی صورت میں احتساب عدالتوں میں ٹھوس شواہد کے ساتھ اور قانون کی مطابق دائر کردیئے جائینگے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز نیب لاہور بیورو کے دورہ کے موقع پر اجلاس کے دوران کیا ۔ ڈی جی نیب لاہور سلیم شہزاد کی جانب سے چیئرمین نیب کو لاہور بیورو کی کارکردگی پر بریفنگ دی گئی ،چیئرمین نیب نے ڈی جی نیب لاہور شہزاد سلیم کی سربراہی میں نیب لاہور کی کارکردگی کو سراہااور کہا کہ نیب لاہور کی کارکردگی انتہائی متاثرکن ہے ،18 ارب روپے بدعنوان عناصر سے برآمد کرتے ہوئے متاثرین کو لوٹائے ہیں،ملزمان کو گرفتار کر کے انصاف کے کٹہرے میں کھڑا کیا۔انہوں نے امید ظاہر کی کہ نیب لاہور میرٹ اور قانون کے مطابق اپنے فرائض سرانجام دیتا رہیگا۔ جسٹس (ر) جاوید اقبال نے کہا کہ میگا کرپشن مقدمات کو فائلوں سے نکالا اور انکی گرد صاف کی جسکی وجہ سے میگا کرپشن مقدمات میں حوصلہ افزا پیش رفت ہوئی ،آنے والے دنوں میں میگا کرپشن کیسز کے اکثر مقدمات ریفرنس کیصورت میں احتساب عدالتوں میں ٹھوس شواہد کے ساتھ اور قانون کیمطابق دائر کردیئے جائینگے۔انہوں نے کہا کہ نیب ہیڈکوارٹر کو بارود سے اڑانے کی دھمکی دی گئی مگر زندگی اور موت اللہ کے ہاتھ میں ہے اور میں اللہ اور اس کے رسول کے علاوہ کسی سے نہیں ڈرتا ،بدعنوانی کیخلاف نیب کا بلا تفریق جہاد جاری رہے گا ۔ انہوں نے کہا کہ 70سالوں میں پہلی مرتبہ نیب نے بدعنوان عناصر سے پوچھا ہے قانون نے آپ و جو اختیارات دیئے انکا میرٹ اور شفافیت سے عمل درآمد کیوں نہیں ہوا اور عوام کے ٹیکس سے حاصل شدہ رقوم کو دونوں ہاتھوں سے کیوں لوٹا گیا،نیب چہرہ نہیں کیس کو دیکھتا ہے،نیب کا الیکشن سے کوئی تعلق نہیں ،نیب کے سامنے صرف اور صرف پاکستان کے مفادات کا تحفظ اور بدعنوانی کا خاتمہ مقصود ہے۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب میں کمپنیز سکینڈل میں اربوں روپے کی مبینہ بدعنوانی ہوئی ، بدعنوان عناصر کو قانون کیمطابق کیفر کردار تک پہنچایا جائیگا،ہم نے نیب میں کام،کام اور صرف کام کے کلچر کو فروغ دیا ہے، ہم نے 7 ماہ کے مختصر عرصہ میں ناصرف نیب کی ساخت کو بہتر بنایا ہے بلکہ عوام کا اعتماد بھی نیب پر بڑھا ہے۔ ادھرمسلم لیگ (ن) کے صدر اور سابق وزیر اعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف صاف پانی کرپشن کیس میں طلبی کے باوجود قومی احتساب بیورو (نیب ) میں پیش نہ ہوئے ، نیب نے لیگی رہنماﺅں کی شکایت پر شہباز شریف کو انتخابات تک دوبارہ نہ بلانے کا فیصلہ کر لیا ۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق نیب لاہور کی جانب سے صاف پانی کمپنی کرپشن کیس میں سابق وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف کو 25جون کو تمام ریکارڈ لیکر پیش ہونے کی ہدایت کی گئی تھی مگر وہ مصروفیات کے باعث نیب میں پیش نہ ہو سکے ۔ذرائع کے مطابق لیگی رہنماﺅں نے شہباز شریف کو کیسز میں بلا کر انتخابی مہم سے روکنے کی شکایت کی تھی جس پر نیب نے شہباز شریف کو الیکشن سے قبل دوبارہ نہ بلانے کا فیصلہ کیا ہے اور اب انہیں الیکشن کے بعد دوبارہ طلب کیا جائے گا۔واضح رہے کہ صاف پانی کرپشن اسکینڈل میں اس سے قبل شہباز شریف کے بیٹے حمزہ شہباز، داماد عمران علی یوسف، سابق وزیر خزانہ عائشہ غوث پاشا، سابق رکن اسمبلی اور ممبر بورڈ آف ڈائریکٹر وحید گل بھی پیش ہو چکے ہیں۔

Scroll To Top