شاہد آفریدی کے لیے الوداعی میچ نہیں تقریب

پاکستانی کرکٹ ٹیم کے آل راؤنڈر شاہد آفریدی کا الوداعی میچ کھیل کر بین الاقوامی کرکٹ کو خیرباد کہنے کا خواب پورا نہ ہوسکا اور ایسا دکھائی دے رہا ہے کہ پاکستان کرکٹ بورڈ نے ان کے اعزاز میں تقریب منعقد کر کے انھیں الوداع کہنے کی تیاری کرلی ہے۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیف آپریٹنگ آفیسر سبحان احمد کے مطابق 27 ستمبر کو ایک اجلاس میں ایسے طریقہ کار کی منظوری دی جائے گی جس کے تحت بین الاقوامی کرکٹ کو خیرباد کہنے والے کرکٹرز کو شایان شان انداز میں الوداع کہا جائے۔

شاہد آفریدی کے علاوہ الوداع لینے والے کرکٹرز میں سعید اجمل کا نام بھی لیا جا رہا ہے۔

واضح رہے کہ شاہد آفریدی کو ویسٹ انڈیز کے خلاف متحدہ عرب امارات میں ہونے والی ٹی ٹوئنٹی سیریز میں شامل کر کے رخصت کرنے سے متعلق خبریں کئی روز سے پاکستانی ذرائع ابلاغ کی شہ سرخیاں بنی ہوئی تھیں۔ اس ضمن میں یہ بھی کہا جا رہا تھا کہ اس تجویز کے پس پردہ چیف سلیکٹر انضمام الحق ہیں جو چاہتے تھے کہ شاہد آفریدی کو الوداعی میچ کھلوا کر رخصت کیا جائے۔ تاہم اس تجویز کو پاکستان کرکٹ بورڈ کے اعلیٰ حکام کی جانب سے پذیرائی نہیں مل سکی۔

شاہد آفریدی نے گذشتہ دنوں کراچی میں ایک تقریب میں صحافیوں سے بات کرتے ہوئے اس تاثر کو غلط قرار دیا تھا کہ انھوں نے خود پاکستان کرکٹ بورڈ سے اپنے الوداعی میچ کی درخواست کی تھی۔ تاہم انھوں نے اس بات کی تصدیق کی تھی کہ وہ اپنے مستقبل کے بارے میں فیصلہ کرنے سے متعلق چیف سلیکٹر انضمام الحق سے رابطے میں ہیں۔

شاہد آفریدی نے اس سال بھارت میں منعقدہ آئی سی سی ورلڈ ٹی ٹوئنٹی کو اپنا آخری انٹرنیشنل ایونٹ قرار دیا تھا اور کہا تھا کہ وہ اس عالمی مقابلے کے بعد بین الاقوامی کرکٹ کو خیرباد کہہ دیں گے۔ لیکن ٹورنامنٹ کے آخری میچ میں شکست کے بعد جب ان سے پوچھا گیا کہ کیا اس میچ کو آپ کا آخری میچ سمجھا جائے تو شاہد آفریدی نے یہ کہہ کر سب کو حیران کردیا تھا کہ وہ اپنے مستقبل کے بارے میں فیصلہ پاکستان واپس جاکر کریں گے۔

ورلڈ ٹی ٹوئنٹی کے بعد انضمام الحق کی سربراہی میں قائم سلیکشن کمیٹی نے شاہد آفریدی کو انگلینڈ کے خلاف واحد ٹی ٹوئنٹی انٹرنیشنل کی ٹیم میں شامل نہیں کیا تھا جس سے یہ اشارے مل گئے تھے کہ شاہد آفریدی سلیکٹرز کے مستقبل کے پلان کا حصہ نہیں رہے۔ اور جب ویسٹ انڈیز کے خلاف تین ٹی ٹوئنٹی انٹرنیشنل میچوں کی ٹیم میں بھی شاہد آفریدی کوشامل نہیں کیا گیا تو یہ بات واضح ہوچکی تھی کہ ان کا بین الاقوامی کریئر اب ختم ہوچکا ہے۔

کرکٹ کے مبصرین کا یہ کہنا ہے کہ اپنی ریٹائرمنٹ کے بارے میں بیانات تبدیل کرنے پر بھی پاکستان کرکٹ بورڈ شاہد آفریدی سے خوش نہیں تھا۔ پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیرمین شہریار خان نے واضح طور پر کہا تھا کہ شاہد آفریدی کو ٹی ٹوئنٹی ٹیم کی قیادت صرف اس شرط پر سونپی گئی تھی کہ وہ ورلڈ ٹی ٹوئنٹی کے بعد بین الاقوامی کرکٹ کو خیرباد کہہ دیں گے۔

Scroll To Top