پنجاب، سندھ اور بلوچستان کی بیوروکریسی میں تبادلے و تقرریاں

  • محمد مجتبیٰ کمشنر لاہور ڈویژن، سیف انجم کمشنر راولپنڈی ڈویژن ،ندیم ارشاد کمشنر گوجرانوالہ ڈویژن، اسد اللہ فیض کمشنر ملتان ڈویژن اورڈاکٹر فرح مسعود کمشنر ساہیوال ڈویڑن مقرر کردیا گیا
  • 18 پولیس افسران کی خدمات پنجاب سے وفاق کے سپرد، سندھ کے 14 سیکریٹری، 6 کمشنرز، 33 ڈپٹی کمشنرز، 14 ڈی آئی جیز تبدیل، بلوچستان کے 3 سیکرٹریز، 6 کمشنرز، 33 ڈپٹی کمشنرز،40 ڈی ایس پیز اور 50 اسسٹنٹ کمشنرز تبدیل

پنجاب، سندھ اور بلوچستان کی بیوروکریسی میں تبادلے و تقرریاں

اسلام آباد(الاخبار نیوز) نگران صوبائی حکومت نے پنجاب کی بیورو کریسی میں بڑے پیمانے پر اکھاڑ پچھاڑ کردی، الیکشن کمیشن نے بھی 34 صوبائی سیکریٹریز اور ایم ڈیز کو تبدیل کرنے کی منظوری دے دی۔سیکریٹری لوکل گورنمنٹ ندیم ارشاد کو کمشنر گوجرانوالہ ڈویژن، سیکریٹری صنعت و تجارت محمد مجتبیٰ کو کمشنر لاہور ڈویژن، سیکریٹری ماحولیاتی تحفظ سیف انجم کو کمشنر راولپنڈی ڈویژن جبکہ ڈی جی ہارٹیکلچر اتھارٹی اسد اللہ فیض کمشنر ملتان ڈویژن اور ڈاکٹر فرح مسعود کو کمشنر ساہیوال ڈویڑن مقرر کردیا گیا۔نگراں حکومت نے نیئر اقبال کو کمشنر بہاولپور، آصف اقبال کمشنر فیصل آباد، رانا گلزار احمد کمشنر ڈی جی خان اور ظفر اقبال کو کمشنر سرگودھا ڈویژن مقرر کیا گیا ہے۔الیکشن کمیشن کی اجازت کے بعد 77 ایس ایس پیز، ایڈیشنل آئی جیز، ایس پیز اور ایڈیشنل ایس پیز بھی تبدیل کئے گئے ہیں، 18 پولیس افسران کی خدمات پنجاب پولیس سے وفاقی حکومت کے حوالے کردی گئی ہیں۔دریں اثناء الیکشن کمیشن نے سندھ میں بڑے پیمانے پر تبادلے و تقرریاں کرتے ہوئے صوبے کے اعلیٰ پولیس افسران، سیکریٹریز اور کمشنرز کو تبدیل کردیا۔الیکشن کمیشن کی جانب سے جاری اعلامیے کےمطابق سندھ کے 14 سیکریٹری، 2 ایڈیشنل آئی جی، ، 6 کمشنر، 33 ڈپٹی کمشنر، 14 ڈی آئی جی اور مختلف ایس ایس پی کے تبادلے کیے گئے ہیں۔الیکشن کمیشن اعلامیے کے مطابق محمد رمضان اعوان سیکریٹری لوکل گورنمنٹ، فضل اللہ پیچوہو سیکریٹری لائیو اسٹاک اور فشری ڈپارٹمنٹ، ڈاکٹر عثمان چاچڑ سیکرٹری، رفیق بورہو سیکریٹری مائنر اینڈ منرل اور عبد الوہاب سومرو ممبر بورڈ آف ریونیو سندھ تعینات کردیئے گئے ہیں۔اعلامیے میں بتایا گیاہےکہ ہارون احمد خان سندھ کے سیکریٹری داخلہ، ڈاکٹر نور عالم سیکرٹری فنانس، عبدالرحیم شیخ سیکری ٹری ورکس اینڈ سروسز، اقبال نفیس چیئرمین انکوائری اینڈاینٹی کرپشن اسٹیبلشمنٹ، محمد نواز شیخ سیکریٹری فوڈ ڈپارٹمنٹ، قاضی شاہد پرویز سیکرٹری اطلاعات، اعجاز احمد مہیسر سیکریٹری ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن اور ایلیاشاہد سیکریٹری اسکول ایجوکیشن تعینات کیے گئے ہیں۔الیکشن کمیشن اعلامیے کے مطابق صالح احمد فاروقی کمشنر کراچی، ذوالفقارعلی شاہ کمشنر میرپور خاص، نوید احمد شیخ کمشنر لاڑکانہ، منظور علی شیخ کمشنر سکھر، احسن علی منگی کمشنر حیدرآباد اور اکرم علی خواجہ کمشنر شہید بینظیرآباد تعینات کیا گیاہے۔الیکشن کمیشن کی جانب سے پولیس میں بھی اعلیٰ سطح پر تبادلے کیے گئے ہیں جن میں ایڈیشنل آئی جی کرائم عامراحمد شیخ کوایڈیشنل آئی جی فنانس اینڈ ویلفئیر کا چارج دے دیا گیا ہے جب کہ جاوید اکبر ریاض ڈی آئی جی لاڑکانہ، ثاقب اسماعیل میمن ڈی آئی جی میرپورخاص، مظہرنواز شیخ ڈی آئی جی شہید بے نظیرآباد اور ذولفقارعلی لاڑک کو ڈی آئی جی سکھر تعینات کیا گیاہے۔اس کےعلاوہ ڈی ا?ئی جی ویسٹ عامر فاروقی ڈی آئی جی ایسٹ زون، ڈی آئی جی حیدرآباد جاوید اختر اوڈھو ڈی آئی جی ساو¿تھ اور ڈی ا?ئی جی ساو¿تھ آزاد خان کو ڈی آئی جی ویسٹ لگایا گیا ہے۔ایس ایس پی لیول کے تبادلوں میں تعیناتی کے منتظر نعمان صدیقی ایس ایس پی ایسٹ، تعیناتی کے منتظرعرفان علی بلوچ ایس ایس پی سینٹرل، ایس ایس پی ویسٹ عمرشاہد ایس ایس پی ساو¿تھ، تعیناتی کے منتظر منیر احمد شیخ ایس ایس پی ملیر، ایس ایس پی ملیرعدیل چانڈیوایس ایس پی حیدرا?باد، ایس ایس پی ایسٹ سمیع اللہ سومرو ایس ایس پی سٹی، ایس ایس پی سینٹرل ڈاکٹر رضوان احمد ایس ایس پی ویسٹ اور ایس ایس پی عامرسدوزئی کو ایس ایس پی کورنگی تعینات کردیا گیا ہے۔اعلامیے کے مطابق ایس ایس پی سٹی شیراز نذیرکا سکھر تبادلہ کردیا گیا جب کہ ایس ایس پی ساو¿تھ سرفرازاحمد کا بدین اور ایس ایس پی کورنگی ذوالفقار مہر کا قمبر تبادلہ کردیا گیا ہے۔ادھر الیکشن کمیشن نے بلوچستان بھر میں بھی بیوروکریسی کی اکھاڑ پچھاڑ کی منظوری دے دی ہے۔بلوچستان حکومت نے صوبے میں بیورو کریسی کے تبادلوں سے متعلق فہرست منظوری کیلئے الیکشن کمیشن کو بھجوائی تھی، الیکشن کمیشن نے صوبائی حکومت کی درخواست پر تین صوبائی سیکرٹریز، چھ کمشنرز، تینتیس ڈپٹی کمشنرز کے تبادلوں کی منظوری دے دی ہے۔بلوچستان پولیس کے چالیس سے زائد ڈی ایس پیز اور پچاس سے زائد اسسٹنٹ کمشنرز کے تبادلوں کی بھی منظور دے دی ہے۔ الیکشن کمیشن حکام کے مطابق پہلے مرحلے میں بلوچستان کی بیوروکریسی میں تبادلے کیے گئے ہیں۔ باقی تینوں صوبوں میں بیوروکریسی میں بڑے پیمانے پر تبادلے کیے جائیں گے۔

Scroll To Top