شام میں خانہ جنگی آئندہ سال تک ختم ہوجائے گی، بشار الاسد

v

شام کے صدر نے ان عزائم کا اعادہ برطانوی اخبار کو دیئے گئے انٹرویو میں کیا۔ فوٹو : فائل

 لندن: شام کے صدر بشار الاسد نے کہا ہے کہ ملک میں جاری خانہ جنگی آئندہ سال تک مکمل طور پر ختم ہو جائے گی اور دہشت گردوں کے قبضے سے ملک کا ایک ایک انچ واگزار کرالیں گے۔

شام کے صدر بشار الاسد نے برطانوی اخبار ’میل‘ کو دیئے گئے اپنے ایک انٹرویو میں کہا ہے کہ مربوط منصوبہ بندی کے ساتھ دہشت گردوں کا قلع قمع کیا جا رہا ہے اور 80 فیصد سے زیادہ علاقے میں حکومت کی رٹ قائم کرنے میں کامیاب ہو گئے ہیں باقی ماندہ علاقوں سے بھی ایک سال کے اندر اندر دہشت گردوں کا صفایا کردیں گے۔

ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ اتحادی ممالک میں اختلافات ہوسکتے ہیں یہ کوئی اچنبھے کی بات نہیں تاہم یہ تاثر دینا درست نہیں کہ روس شام کے حکومتی فیصلوں میں مداخلت کر رہا ہے جس کی وجہ سے اختلافات پیدا ہورہے ہیں درحقیقت روس نے فيصلہ سازی ميں کبھی زبردستی نہيں کی، ہم اپنی بقا کی جنگ لڑ رہے ہیں اور یہ جنگ ایک ایک انچ زمین کے واگزار کرانے تک جاری رہے گی۔

انہوں نے مزید کہا کہ شامیوں نے قیام امن کے لیے بے پناہ قربانیاں دی ہیں اور دہشت گردوں کو اپنے عزم اور حوصلے کی بنیاد پر مار بھگایا ہے، یہ دہشت گرد آج شام میں خانہ جنگی کا باعث ہیں تو کل کسی اور علاقے میں تباہ کاریاں پھیلا سکتے ہیں، عالمی قوتوں کو یہ بات سمجھنے کی شدید ضرورت ہے۔

Scroll To Top