مودی کا جو یار ہے غدار ہے غدار ہے: وزیراعظم کی نواز شریف کے بیان کی وضاحت مسترد

  • نوازشریف سے پوچھنا چاہتے ہیں اس بیان کی آخر کیا ضرورت تھی؟ ، شاہد محمود قریشی ، اپوزیشن کا شور شرابہ ،ایوان زیریں سے واک آﺅٹ
  • جس کے پیٹ میں درد ہے بات کرلے، روز روز کے تماشے مت لگائیں، ملک کو چلنے دیں ، وزیر اعظم شاہد خاقا ن عباسی
اسلام آباد:۔ نیپال کے آرمی چیف جنرل راجیندرا اپنے وفد کے ہمراہ وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی سے ملاقات کر رہے ہیں

اسلام آباد:۔ نیپال کے آرمی چیف جنرل راجیندرا اپنے وفد کے ہمراہ وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی سے ملاقات کر رہے ہیں

اسلام آباد (این این آئی)قومی اسمبلی میں اپوزیشن نے سابق وزیر اعظم محمد میاں نوازشریف کے متنازع بیان پر وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کی ایوان میں وضاحت کو مسترد کرتے ہوئے احتجاجاً ایوان سے واک آﺅٹ کیا ۔مودی کا جو یار ہے،غدارہے غدار ہے۔ منگل کو وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے قومی اسمبلی میں اظہار خیال کرتے ہوئے کہاکہ نوازشریف کا بیان بھارتی میڈیا نے اپنے مقاصد کےلئے استعمال کیا اور یہاں پر اسے سیاسی مقاصد کے لیے پھیلایا جارہا ہے ، نوازشریف کے بیان کی مس رپورٹنگ ہوئی ہے۔وزیراعظم کے خطاب کے دوران پاکستان تحریک انصاف کی رہنما شیریں مزاری نے بولنا شروع کر دیا جس پر شاہد خاقان عباسی نے اسپیکر قومی اسمبلی کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ جن کے پیٹ میں درد ہے ان کو بولنے دیں۔وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کے پیٹ درد والے جملے پر شور شرابہ مچ گیا وزیراعظم کے بیان کے فوری بعد پی ٹی آئی کے شاہ محمود قریشی نے کہا کہ قومی سلامتی کمیٹی کا اجلاس بلایا گیا، نوازشریف نے مسترد کیوں کیا؟جس پر وزیراعظم نے کہا کہ قومی سلامتی کا اجلاس بلانا ضروری تھا جس میں ملکی سلامتی کا معاملہ پربات ہوئی۔پیپلزپارٹی کے رہنما اعجاز جاکھرانی نے کہا کہ وزیراعظم نے پیٹ میں درد کی بات کی اس پر واک آﺅٹ کرتے ہیں۔اعجاز جاکھرانی کے بیان پر وزیراعظم نے کھڑے ہوکر وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ میں نے کسی کا نام نہیں لیا اور الزام نہیں لگایا بلکہ یہ کہا کہ جس کے پیٹ میں درد ہے بات کرلے، روز روز کے تماشے مت لگائیں، ملک کو چلنے دیں۔

Scroll To Top