ریاست مخالف بیان: شاہد خاقان عباسی نا اہل نواز شریف کو بچانے کیلئے میدان میں آ گئے

  • نوازشریف کا بیان مس رپورٹ ہوا، سول ملٹری تعلقات میں تناﺅ پیدا ہوتا ہے تو حقائق سامنے آنے پر ختم بھی ہو جاتا ہے
  • استعفیٰ نہیں دوں گا مجھے پر کوئی دباو¿ نہیں، اکتیس مئی کے آخری منٹ تک بھی حکومت میں رہینگے،وزیر اعظم کی نیوز کانفرنس

شاہد خاقان عباسی

اسلام آباد ( آن لائن) وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی ممبئی حملوں سے متعلق متنازعہ بیان پر اپنے قائد نواز شریف کو بچانے میدان میں آگئے اور کہا کہ نوازشریف کا بیان مس رپورٹ ہوا، سول ملٹری تعلقات میں تناﺅ پیدا ہوتا ہے تو حقائق سامنے آنے پر ختم بھی ہو جاتا ہے۔میں استعفیٰ نہیں دوں گا مجھے پر کوئی دباو¿ نہیں، اکتیس مئی کے آخری منٹ تک بھی حکومت میں رہینگے۔ اسلام آباد میں پیر کو نیوز کانفرنس سے خطاب کے دوران شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا کہ سابق وزیرعظم نواز شریف نے ان سے ملاقات کے دوران واضح کی کہ نان اسٹیٹ ایکٹرز کے حوالے سے انکے بیان کیرپورٹنگ درست نہ کی گئی۔ بطور وزیراعظم بھی اس ذمہ داری سے آگاہ تھا کہ پاکستان کی سرزمین نان اسٹیٹ ایکٹرز کے ذریعے کسی ملک کے خلاف استعمال نہیں ہونگی اور اب بھی اسکا ادراک ہے۔ انٹرویو کے ایک حصے کو بھارتی میڈیانے اپنے مقاصد کےلئے اچھالا اور ہمیں اسکاحصہ نہیں بننا چاہئے۔ زمہ داری کا مظاہرہ کرنا چاہیے بھارت نے اجمل قصاب کو پھا نسی دینے میں جلد بازی کی۔ وہ ایک مرکزی مجرم تھا وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کا مزید کہنا تھا کہ میں کسی کے کہنے پر وضاحتی بیان نہیںدے رہا۔ بطور وزیراعظم ہمارا فرض ہے کہ ملک کو درپیش کسی بھی چیلنج کے بارے میں بات کروں۔ نواز شریف میرے رہبر ہیں شاہد خاقان عباسی بولے سول ملٹری تعلقات میں تناﺅ آتا ہے اور حقائق سامنے آنے پر ختم بھی ہو جاتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ الیکشن وقت پر ہونگے۔ میں مستعفی نہیں ہورہا ۔ وزیر اعظم نے ایک بار پھر واضح کیا کہ وہ پارٹی رہبر کے ساتھ کھڑے ہیں۔ شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا کہ سابق وزیر اعظم نواز شریف کا کہنا ہے کہ وہ کل کے وضاحتی بیان پرقائم ہیں۔ جبکہ عام انتخابات میں خلائی مخلوق کے کردار پر انہوں نے کہا کہ مخلوق خلائی ہو یا زمینی ان کی جماعت انتخابات میں حصہ لے گی اور کامیابی حاصل کرے گی ۔

Scroll To Top