مجھے اندر کیوں کیا؟

aaj-ki-baat-new

آج میں ویسا ہی ایک مختصر کالم لکھنے کا ارادہ رکھتا ہوں جیسا اس وقت لکھتا تھا جب میں نے اپنے روزانہ تجزیوں کے لئے ”آج کی بات“ کا عنوان منتخب کیا تھا۔۔۔
آج کی بات یہ ہے کہ میاں صاحب نے آئین کی وہ تمام شقیں ختم کرڈالنے اور ملک ان تمام اداروں کو ریٹائرمنٹ پربھیجنے کا عندیہ دیا ہے جو کبھی بھی اور کسی بھی صورت میں ان کے اقتدار کے لئے خطرہ بن سکیں۔۔۔ سرفہرست ان اداروں میں نیب ہے۔۔۔پھر عدلیہ کی باری آئے گی اور آخر میں پنجاب کے ریٹائرڈ آئی جی سکھیرا سے کہا جائے گا کہ آپ فوج کی کمان سنبھال لیں۔۔۔
میاں صاحب کو یقین ہے کہ اگلے انتخابات میں پاکستان کے عوام دیوانہ وار نکلیں گے اور نون لیگ کے ڈبوں میں کورے کا غذوں کی جگہ سچ مچ کے کھرے ووٹ ڈالیں گے۔۔۔
پھر قومی اسمبلی ایک ہی روز میں سارا آئین تبدیل کرڈالے گی۔۔۔(خدا کا شکر ہے کہ اس نے میاں صاحب کے ذہن میں قرآن تبدیل کر ڈالنے کا شیطانی خیال نہیں ڈالا۔۔۔)
ادب میں ایک چیزFantasyہوتی ہے۔۔۔ Fantasyکا کمال یہ ہوتا ہے کہ آدمی جو کچھ سوچتا ہے اس پر اسے ناقابلِ تردید حقیقت کا گماں ہونے لگتا ہے۔۔۔
میاں صاحب نے چند ماہ میں چندمعرکتہ آلارا جملے تخلیق کئے ہیں ۔۔۔
(1) مجھے کیوں نکالا۔۔۔؟
(2) ووٹ کو عزت دو (عدلیہ کو بے عزت کرو)
(3) میرا مقابلہ عمران خان اور زرداری جیسے کیڑوں مکوڑوں سے نہیں۔۔۔ خلائی مخلوق سے ہے۔۔۔
میاں صاحب کا اگلا جملہ یہ ہوگا ۔۔۔
”مجھے اندر کیوں کیا ۔۔۔؟“

Scroll To Top