چین پرمارکیٹ رسائی کے حوالے امریکی الزامات غیر حقیقی اور مبہم ہیں:۔اقتصادی ماہرین

خصوصی رپورٹ

عالمی اقتصادی ماہرین نے چین کے خلاف امریکی الزامات کو غیر حقیقی اور مبہم قرار دیا گیا ہے، امریکی انتظامیہ نے چین کے خلاف سیکشن301تحقیقات کے حوالے سے الزام عائد کیا ہے کہ چین نے امریکی سرمایہ پر چین میں پابندی عائد کر رکھی ہے سراسر الزام تراشی ہے، اس امر کی وضاحت کرتے ہوئے بین الاقوامی ماہرین نے آراءپیش کی چین گزشتہ کئی عشروں سے چین میں غیر ملکی سرمایہ کاری کو فروغ دینے کے حوالے سے وسعت اور اصلاحات پر مبنی کو یقینی بنائے ہوئے ہے جن کی مدد سے چین میں غیر ملکی سرمایہ کاری کے حوالے سے ایک شفاف، مستحکم اورپائدار ماحول پیدا ہورہا ہے جس سے غیر ملکی سرمایہ کاری کو چین میں بھر پور ترویج حاصل ہو رہی ہے۔ اس حوالے سے چینی وزارتِ کامرس کے ترجمان گاﺅ فینگ نے کہا ہے کہ چین ملکی اور غیر ملکی سرمایہ کے فروغ اور اعتماد سازی کے حوالے سے ہر ممکن عوامل کو یقینی بنانے کے لیے کوشاں ہے۔ انہوں نے واضح کیا کہ غیر ملکی سرمایہ کاری کو تحفظ فراہم کرنے کے حوالے سے قانون سازی اور غیر ملکی سرماری کو یقینی بنانے کے حوالے سے دیگر دستاویزی عوامل کو سہل بنانے کے حوالے سے تیزی سے قانون سازی کر رہا ہے تاکہ غیر ملکی سرمایہ کا ری کا اعتماد چین پر بحال رہے اس حوالے سے چین غیر ملکی سرمایہ کاری کو ایک بہتر ماحول فراہم کرنے کے حوالے سے شفاف اور مستحکم ماحول فراہم کرنے کے لیے کوشاں ہے۔اس حوالے سے مقامی اور غیر ملکی سرمایہ کاری کمپنیز کو برابری کی بنیاد پر سہولتوں کو فراہم کیا جا رہا ہے۔ اس حوالے سے کمپنی لاءاور پارٹنر شپ انٹر پرائیسز لا¾ز کو بہتر اور شفاف انداز میں استوار کیا جا رہا ہے تاکہ برابری کی بنیاد پر سب کو سہولتوں کی فراہمہ یقینی بنائی جا سکیں۔چائینیز سنٹر برائے انٹر نیشنل اکنامک ریسرچ کے ریسرچرژانگ مونان نے کہا ہے چینی حکومت نے غیر ملکی سرمایہ کاری کو فروغ دینے کے حوالے سے ملک میں آزادانہ ٹریڈ زونز کی تعداد کو بڑھا کر گیارہ کر دیا ہے۔ انہوں نے مزید واضح کیا کہ چینی حکومت نے ملک کے تمام اداروں کو اصلاحات اور وسعت پسندانہ پالیسز کے زرئعے سے جدت پسندی کی طرف راغب کر دیا ہے اور مستقبل میں تمام اداروں کو بشمول مالیاتی اداروں، صحت اور تعلیم کو شعبوں کو ایک خود کار نظام کے تحت بہتری اور کشادگی کا جانب مرغوب کر دیا گیا ہے، انہوں نے کہا کہ 2017میں چین کی وزارتِ کامرس اور دیگر قومی اداروں نے غیر ملکی سرمایہ کاری کے فروغ کے حوالے سے ایک رہنما کیٹالاگ جاری کی ہے اور ان شعبوں کی لسٹ جاری کی گئی ہے جن میں غیر ملکی سرمایہ کاری سے بہتر نتائج حاصل کیئے جا سکتے ہیں ان شعبوں میں مینو فیکچرنگ اور معدنیات شامل ہیں جن میں غیر ملکی سرمایہ کاری سے خاطر خواہ نتائج حاصل کیئے جا سکتے ہیں۔ امریکن چیمبر آف کامرس ان چائینہ کی بزنس سروے رپورٹ برائے 2018کے مطابق امریکی کی بیشتر انٹر پراسیئسز چین میں سرمایہ کاری کے حوالے سے بہت پر امید اور با اعتماد ہیں اور اس سروے میں شامل 75فیصد کمپنیز سے سال 2017کو چین میں غیر ملکی سرمایہ کاری کے حوالے سے ایک مثبت سال قرار دیا ہے جہاں پر انہیں اپنے سرمایہ پر خاطر خواہ منافع حاصل ہوا۔ اس طرح سے ساٹھ فیصد سے زائد امریکی سرمایہ درانہ کمپنیز نے چین کو دنیا میں تین بہتر سرمایہکاری ممالککی فہرست میں شامل کیا ہے۔ گزشتہ سال چین کے بینکنگ ریگولیٹری کمیشن نے غیر ملکی بینکنگ سیکٹر کو چین میں سرمایہ کاری کے حوالے سے انتطامی لائنسنگ کے لیے بنیادی عوامل میں تبدیلی کی ہے اس حوالے سے 2025کی ویژن برائے میڈ ان چائینہ کو مقامی اور بین الاقوامی سطع پر بھر پور پزیرائی حاصل ہورہی ہے۔اور اس ویژن کے تحت تمام ملکی اور غیر ملکی کمپنیز کو چین میں برابری کی بنیادوں پر سہولتوں کی فراہمی یقینی بنائی جا رہی ہے۔اس طرح اس ضمن میں یہکہنا کسی طور درست نہیں کہ چین غیر ملکی سرمایہ کاری کے حوالے سے پیچیدہ سورتحال کو جنم دے رہا ہے، چین ملکی اور غیر ملکی انٹر پراسئیسز کو ہر طرح سے سہولتوں کی فراہمی یقینی بنا رہا ہے۔اور اس حوالے سے چین گرین ڈیویلپمنٹ پروگرام کے تحت ترقی اور خوشحالی کے بہت سے نئے مواقع پیدا کر رہا ہے۔۔

Scroll To Top