سانحہ ماڈل ٹاﺅن: چیف جسٹس کا متاثرین کو انصاف کی فراہمی میں تاخیر کا نوٹس

  • جسٹس میاں ثاقب نثار عدالتی امور کی انجام دہی کے لیے سپریم کورٹ لاہور رجسٹری پہنچے تو متاثرین ماڈل ٹاﺅن اپنی فریاد لے کر آگے بڑھے، چیف جسٹس نے ملاقات کیلئے کچھ کو بلایا تو انہوں نے کیس میں سست روی اور تاخیر کی شکایت کی
  • چیف جسٹس نے متاثرین کو یقین دلایا کہ انہیں بہر طورانصاف ملے گا، انکے ہو تے ہوئے کسی کو ڈرنے کی ضرورت نہیں ہے ، انہوں نے ایڈووکیٹ جنرل پنجاب کو حکم دیا کہ انصاف میں تاخیر کی وجوہات اور تفصیلات پیش کی جائیں

ماڈل ٹاﺅن

اسلام آباد (الاخبار نیوز)چیف جسٹس پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار نے سانحہ ماڈل ٹاﺅن کے متاثرین کو انصاف میں تاخیر کا نوٹس لیتے ہوئے ایڈووکیٹ جنرل پنجاب سے انصاف میں تاخیر کی وجوہات اور دیگر تفصیلات طلب کرلیں۔سانحہ ماڈل ٹاﺅن کے متاثرین جن میںمرد و ں ،خواتین اور بچوں کی بڑی تعداد شریک تھی انصاف کے نعروں پر مبنی پلے کارڈز اور بینرز اٹھا کر سپریم کورٹ لاہور رجسٹری کے باہر پر امن احتجاج کیا۔چیف جسٹس پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار عدالتی امور کی انجام دہی کے لیے سپریم کورٹ لاہور رجسٹری پہنچے تو متاثرین ماڈل ٹاﺅن اپنی فریاد لے کر آگے بڑھے۔ جس کے بعد چیف جسٹس پاکستان نے متاثرین میں سے کچھ لوگوں کو ملاقات کیلئے بلالیا۔ متاثرین نے کیس میں سست روی اور تاخیر کی شکایت کی جس پر چیف جسٹس پاکستان نے ایڈووکیٹ جنرل پنجاب سے انصاف میں تاخیر کی وجوہات اور تفصیلات طلب کرلیں۔سانحہ ماڈل ٹاﺅن میں پولیس فائرنگ کی زد میں آکر جاں بحق ہونے والی خاتون کی بیٹی بسمہ نے چیف جسٹس پاکستان میاں ثاقب نثار سے ملاقات میں کہا کہ چار سال گزر گئے ہیں لیکن ابھی تک انصاف نہیں ملا۔چیف جسٹس پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار نے یقین دلایا کہ انصاف ملے گا،میرے ہوتے ہوئے ڈرنے کی ضرورت نہیں۔چیف جسٹس نے ایڈووکیٹ جنرل پنجاب کو حکم دیا کہ انصاف میں تاخیر کی وجوہات اور تفصیلات پیش کی جائیں۔

Scroll To Top