یوم یکجہتی کشمیر:ملک بھر میں ریلیاں، مظاہرے ، بھارت مخالف نعرے

  • ریلیوں اور مظاہروں میں سیاسی و مذہبی جماعتوں کے رہنماﺅںاور شہریوں کی کثیر تعداد میں شرکت ،مودی مخالف اورکشمیریوں کے حق میں نعرے

یوم یکجہتی کشمیر:ملک بھر میں ریلیاں، مظاہرے ، بھارت مخالف نعرےاسلا م آباد/ لاہور/ کراچی/ پشاور/کوئٹہ/ مریدکے/گوجرانوالہ(این این آئی)بھارتی افواج کے مظالم اور بربریت کے خلاف وفاقی حکومت کی کال پر ملک بھر میں یوم اظہار یکجہتی کشمیر منایا گیا ، اس دن کی مناسبت سے ملک بھر میں ریلیاں نکالی گئیں اور مظاہرے کئے گئے جس میں سیاسی و مذہبی جماعتوںکے رہنماﺅں، سول سوسائٹی کے نمائندوں سمیت ہزاروں پاکستانیوں نے شرکت کی ، شرکاءنے ہاتھوں میں کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کی تحاریر پر مبنی پلے کارڈز اور بینرز اٹھا رکھے تھے جبکہ اس موقع پر بھارت کے خلاف اور کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کے لئے نعرے بھی لگائے گئے ۔پاکستان مسلم لیگ (ن) کے کے زیر اہتمام کشمیریوں پر بھارتی افواج کے مظالم کے واقعات کےخلاف چھ اپریل کے دن کو یوم احتجاج اور کشمیریوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کے طور پر منایا گیا۔اس سلسلہ میں ریلی نکالی گئی اور لاہور پریس کلب شملہ پہاڑی چوک میں کیمپ لگایا گیا جس میں صوبائی زیر خواجہ عمران نذیر،لارڈ میئر لاہور کرنل(ر) مبشر جاوید، ارکان اسمبلی ماجد ظہور ،چیف آرگنائزر سید توصیف شاہ،مسلم لیگ (ن) ٹریڈرز ونگ کے سینئر نائب صدر میاں عثمان ،حافظ نعمان سمیت کارکنوں اور عوام کی کثیر تعداد نے شرکت کی ۔خواجہ عمران نذیر ، سید توصیف شاہ ، کرنل (ر)مبشر جاوید ، میاں عثمان نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ خطے کا امن کشمیر کے پر امن حل سے مشروط ہے ۔ا نہوںنے کہا کہ پاکستانی حکومت اور قوم اپنے کشمیریوں بھائیوں کی جدوجہد میں ان کے شانہ بشانہ ہے اور انکی ہر سطح پر اخلاقی اور سفارتی حمایت جاری رکھے گی ۔ اسی لئے وفاقی کابینہ نے چھ اپریل کو کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کے دن کے طو رپر منانے کا اعلان کیا ۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کے استحکام اور بقاءکے لیے کشمیر سے بھارت کا غاصبانہ قبضہ چھڑانابہت ضروری ہے۔کشمیری پاکستان کی سالمیت کی جنگ لڑ رہے ہیں ،کشمیر کے بغیر پاکستان نامکمل ہے ،پاکستانی قوم شہدائے کشمیر کی قربانیاں رائیگاں نہیں جانے دے گی۔مختلف سیاسی و سماجی جماعتوں کے رہنماﺅں نے کشمیر سنٹر لاہور کے زیراہتمام یوم مذمت اور کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کرتے ہوئے پریس کلب کے باہراحتجاجی مظاہرہ کیا ۔ممبر قانون ساز اسمبلی غلام محی الدین دیوان نے کہا کہ حالیہ ریاستی دہشت گردی سے بھارت کا گھناو¿نا چہرہ اور اس کے مضموم عزائم کھل کر سامنے آگئے ہیں۔بھارت کو معلوم ہونا چاہیے کہ اس طرح کے سامراجی حربوں سے کشمیریوں کے جذبہ حریت کو کچلا نہیں جاسکتا۔اقوام متحدہ پر لازم ہے کہ انسانی حقوق کی بدترین پامالی پر نوٹس لے اور قراردادوں پر عمل درآمد کی فوری کوشش کرے۔ پاکستان تحریک انصاف آزاد کشمیر لاہور ڈویژن کے صدر فاروق آزاد نے کہا کہ بھارت کشمیریوں پر جو مظالم ڈھا رہا ہے اس کی انسانی تاریخ میں مثال نہیں ملتی۔ اگر غیر انسانی مظالم کا سلسلہ ایسے ہی جاری اور عالمی ضمیر نے اس پر کوئی ایکشن نہ لیا تو یہ صرف کشمیریوں نہیں پوری انسانیت پر ظلم ہوگا۔آج ہم کشمیریوں کے ساتھ مکمل اظہار یکجہتی کرتے ہیں۔پاکستان تحریک انصاف نے بھی پنجاب اسمبلی کے سامنے مال روڈ پر بھارت کے خلا ف ےو م سےاہ مناےا ۔ اس موقع پر حریت رہنما یاسین ملک کی اہلیہ مشال ملک،پی ٹی آئی کے مرکزی رہنما اعجازاحمد چوہدری ، اےم اےل اے غلام محی الد ےن دےوان ،ممبر ویمن ونگ ایگزیکٹو کونسل مسرت جمشید چیمہ ،اراکین اسمبلی شعےب صدےقی ، نوشےن حا مد معراج سمیت کارکنوں کی کثیر تعداد نے شرکت کی ۔شرکاءسے خطاب کرتے ہوئے مشال ملک اور اعجاز چوہدری نے کہا کہ آزادی کشمےر ےوںکا پےدائشی حق ہے ہم سفارتی اوراخلاقی طور پر اس کی حماےت جاری رکھےں گے، بھارتی رےاستی دہشت گردی کی جتنی مذمت کی جائے وہ کم ہے ۔پاکستان کے دفتر خارجہ اور وزےر اعظم کو عالمی سطح پر کشمےر کامسئلہ اٹھانا چاہیے ، عالمی برادرای اپنی آنکھےں اور کان کھولے اور ہوش کے ناخن لےں،بےن الاقوامی قوتوں نے دہرامعےار اپناےاہواہے ، ےواےن او کا کردارمشکوک ہو تا جارہا ہے۔رہنماﺅں نے کہاکہ اےسٹ تمےوراور مغربی سوڈان کی عوام کو آزادی تو مل سکتی ہے کشمےر اور فلسطےن کی عوام کا کےا قصور ہے کے انہیںآزادی کےو ںنہےں ملتی ، آج پوری پاکستانی قوم سڑکوں پر نکل کر کشمےرےوں سے اظہار ےکجہتی کا مظاہرہ کررہی ہے اور وہ ےقےن دلا رہے ہےں کہ کشمےرےوں کی آزادی کی منزل قرےب ہے اور بھارت کو آزادی دےنا پڑے گی ۔ تحرےک انصاف اقتدار مےں آئے گی تو وہ مسئلہ کشمےر کو ترجےح بنےادوں پر حل کروائے گی۔نظریہ پاکستان ٹرسٹ کے زیر اہتمام ایوان کارکنان تحریک پاکستان شاہراہ قائداعظمؒ لاہور کے احاطہ میں ”یوم یکجہتی کشمیر“ کے موقع پر کشمیری بھائیوں سے اظہارِ یکجہتی کیلئے مظاہرہ کیا گیا۔مظاہرے کی قیادت تحریک پاکستان کے سرگرم کارکن اور نظریہ¿ پاکستان ٹرسٹ کے وائس چیئرمین پروفیسر ڈاکٹر رفیق احمد نے کی جبکہ اس موقع پر سیکرٹری نظریہ¿ پاکستان ٹرسٹ شاہد رشید،فاروق خان آزاد، مرزا محمد صادق جرال، ریاض احمد چودھری، سید یاور حسین گیلانی، محمد اعظم، محمد ریاض، قمر الحسن چودھری، خالد مجید، عبدالحمید، محمد سعید ،کشمیری رہنماﺅں، نظریہ¿ پاکستان ٹرسٹ و تحریک پاکستان ورکرز ٹرسٹ کے عہدیداران و کارکنان سمیت مختلف شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے افراد بڑی تعداد میں موجود تھے ۔ مظاہرین نے بھارتی ظلم وستم کی پرزور مذمت اور کشمیری بھائیوں سے اظہار یکجہتی کیلئے پلے کارڈز اٹھا رکھے تھے جن پر ” کشمیر بنے گا پاکستان“،” ظلم پھر ظلم ہے بڑھتا ہے تو مٹ جاتا ہے“،” ہم نہتے کشمیریوں پر بھارتی مظالم کی پر زور مذمت کرتے ہیں“ ، ”رنگ لائے گا شہیدوں کا لہو“ اور بھارتی فوج کے ظلم وستم کیخلاف اور کشمیریوں کے حق میں نعرے درج تھے ۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے ڈاکٹر رفیق احمد نے کہا کہ قائداعظم محمد علی جناحؒ نے کشمےر کو پاکستان کی شہ رگ قرار دےا تھا۔ پاکستان کا قےام دو قومی نظرےے کا مرہونِ منت تھا اور آج کشمےری مسلمان بھی اسی دوقومی نظرےے کی بنےاد پر بھارتی جبر و استبداد کے خلاف برسرپےکار ہےں۔ کشمیری حق خودارادیت کیلئے اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کر رہے ہیں۔ہم دنیا کویہ پیغام دینا چاہتے ہیں کہ ہم کشمیریوں کے ساتھ ہیں۔ یو م یکجہتی کشمیر پر گورنمنٹ کالج یونیورسٹی لا ہور میں سیمینار کا انعقاد کیا گیا جس سے حریت رہنما یا سین ملک کی اہلیہمشال حسین ملک ،وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر حسن امیر شاہ ،قائد اعظم پو لیٹیکل سوسائٹی کے صدر مو من یا ر خا لد اور کشمیر ی طلبہ ربیعہ نبی بٹ نے سیمینار سے خطاب کیا ۔ا س مو قع پر مشعال ملک کا کہنا تھا کہ مسئلہ کشمیر کو حل کیئے بغیر خطے میں امن ممکن نہیں،اگر مسئلہ کشمیر وقت پر حل ہو جا تا تو اس وقت اس خطے پر ایٹمی جنگ کے خطرات کے بادل نہ منڈلا رہے ہو تے ۔ ان کا مزید کہناتھا کہ بھارت کی 7 لاکھ فوج کشمیر میں مو جو د ہے جس نے کشمیریو ں سے جینے کا حق بھی چھین لیا ہے ،انسانی حقوق کی شدید خلاف ورزیو ں پر عالمی برادری خا مو ش تما شائی بنی ہوئی ہے ۔مشعال ملک کا کہنا تھا کہ تمام سیا سی جماعتو ں اور قیادت کو مسئلہ کشمیر پر یکجا ہو نا چاہیے تا کہ وہ عالمی بر ادری کا اس مسئلہ کے پر امن حل کیلئے تعاون حا صل کر سکے ۔انہو ں نے اس مو قع پر کشمیری خواتین کو خراج تحسین پیش کرتے ہو ئے کہا کہ اس وقت کشمیر میں لڑکیا ں آزادی کی تحریک چلا رہی ہیں وہ سکو ل بیگ جلا کر تحریک میں شامل ہو رہی ہیں۔انہو ں نے طلباءکو تلقین کی کہ وہ سو شل میڈیا اور دیگر پلیٹ فارم پراپنے کشمیری بھا ئیو ں کیلئے آوازاٹھا ئیں ۔بعدازاں جی سی یو میں نمازِ جمعہ میں کشمیر کی آزادی کے لیے خصوصی دعا بھی ہوئی اور یونیورسٹی اساتذہ نے اپنے کشمیری بہن بھائیوں کے ساتھ اظہارِ یکجہتی کے لیے خصوصی قرار داد بھی منظور کی۔وفاقی دارالحکومت اسلام آباد، کراچی ،کوئٹہ،پشاور سمیت ملک کے مختلف مقامات پر بھی بھارتی افواج کی بربریت کے خلاف اور کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کے لئے ریلیاں نکالی گئیں اور مظاہرے کئے گئے ۔ اس موقع پر شرکاءکشمیریوں کے حق میں اور بھارت کے خلاف نعرے لگاتے رہے ۔ اس مناسبت سے منعقدہو نے والی تقریبات میں کشمیریوں سے اظہار یکجہتی اور بھارتی مظالم کے خلاف قراردادیں بھی منظور کی گئیں۔

Scroll To Top