کھلاڑیوں کے ضابطہ اخلاق کا تفصیلی جائزہ لیا جائے گا، ڈیوڈ رچرڈسن

eکوڈ آف کنڈکٹ میں موجود ابہام دور کرنے کی ضرورت ہے، ڈیوڈ رچرڈسن۔ فوٹو: فائل

 دبئی: آئی سی سی کے چیف ایگزیکٹو ڈیوڈ رچرڈسن نے کہا ہے کہ آئی سی سی کھلاڑیوں کے ضابطہ اخلاق پر وسیع پیمانے پر جائزہ لیا جائے گا اور کوڈ آف کنڈکٹ میں موجود ابہام دور کرنے کی ضرورت ہے۔

انٹرنیشنل کرکٹ کونسل (آئی سی سی) کے چیف ایگزیکٹو ڈیوڈ رچرڈسن نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ کھلاڑیوں کا نامناسب رویہ ہمیشہ سے ایک مسئلہ رہا ہے اور یہ ہمارے ایجنڈے کا حصہ بھی تھا تاہم کیپ ٹاؤن میں ہونے والے واقعہ کے بعد اس حوالے سے فوری اور سخت اقدامات کی ضرورت ہے۔ ڈی میرٹ پوائنٹ سسٹم بھی اس حوالے سے زیادہ کارگر نہیں، کھلاڑیوں کے رویے اور خاص طور پر ضابطہ اخلاق کا جائزہ لیا جائے گا۔

انہوں نے کہا کہ اسپورٹس مین اسپرٹ کے حامل سابق کرکٹرز ایلن بارڈر، انیل کمبلے، شان پولاک، کورٹنی والش، رچی رچرڈسن و دیگر کے علاوہ موجودہ کرکٹرز کو بھی مدعو کیا جائے گا۔ کرکٹ کمیٹی اجلاس میں کوڈ آف کنڈکٹ کی خلاف ورزی پر یکساں سزا کے حوالے سے بھی بحث کرے گی۔

ان کا کہنا تھا کہ آئی سی سی کا کوڈ آف کنڈکٹ موجود تو ہے تاہم اس میں ابہام کی وجہ سے آفیشلز کو اطلاق میں مشکلات درپیش ہوتی ہیں، ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزیوں کو سمجھنے اور مزید واضح کرنے کی ضرورت ہے تاکہ ان کا اطلاق آسانی سے کیا جا سکے۔

Scroll To Top