وزیراعظم شاہد خاقان عباسی چیف جسٹس ثاقب نثار ملاقات: عدلیہ بلا خوف و خطر آئینی ذمہ داریاں پوری کرتی رہے گی: چیف جسٹس پاکستان

  • ملاقات وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کی درخواست پر ہوئی، جو اٹارنی جنرل کے ذریعے چیف جسٹس پاکستان کو ارسال کی گئی تھی،سپریم کورٹ اعلامیہ
  • وزیر اعظم کی طرف سے ازخود نوٹسز کیسز،جوڈیشل سسٹم کی ری ویمپنگ ،سستے اور فوری انصاف کی فراہمی کیلئے تمام ضروری وسائل کی فراہمی یقینی دہانی

چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار

اسلام آباد( ریاض اے ملک سے) وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی اور چیف جسٹس پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار کے درمیان گزشتہ شام ایک گھنٹہ55 منٹ کی طویل ملاقات ہوئی جس میں ملکی امور تفصیل سے زیر غور آئے، سپریم کورٹ کے جاری اعلامیے کے مطابق ملاقات نہایت خوشگوار ماحول میں ہوئی جوکہ وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کی درخواست پر ہوئی، وزیر اعظم نے ملاقات کا پیغام اٹارنی جنرل کے ذریعے چیف جسٹس پاکستان کو ارسال کیا تھا۔ اس موقع پر وزیر اعظم نے عدالتی نظام کی بہتری کے لئے مکمل تعاون کا یقین دلایا انہوں  نے ایف بی آر کی مشکلات اور ٹیکس مقدمات کے معاملات کا تذکرہ بھی کیا علاوہ ازیں انہوں نے تعلیم اور صحت کے شعبوں میں کارکردگی بہتر بنانے کا اظہار بھی کیا اور جوڈیشل سسٹم کی ری ویمپنگ میں بھی دلچسپی کا اظہار کیا انہوں نے ازخود نوٹس کیسز میں مکمل تعاون کا یقین دلایا۔ جہاں تک چیف جسٹس پاکستان نے محصولات سے متعلق کیسز جلد نمٹانے کی یقین دہانی کرائی اور اس امر کا برملا اظہار بھی کیا کہ عدلیہ آئینی ذمہ داریاں پوری کرتی رہے گی اور بے خوف و خطر ہو کر شفاف طریقے سے اپنے فرائض سر انجام دیتی رہے گی۔

Scroll To Top