توہین عدالت کیس: نواز شریف، مریم نواز کیخلاف سماعت کیلئے لارجر بینچ تشکیل دینے کی سفارش

  • لاہورہائیکورٹ کا نواز شریف، مریم نواز کےخلاف توہین عدالت کی درخواستوں پرچار صفحات پر مشتمل تفصیلی فیصلہ جاری، معاملہ اہم نوعیت کا ہے، سماعت کےلئے بڑا بنچ تشکیل دیا جائے،جسٹس مظاہر علی اکبر
  • کیس چیف جسٹس کو بھجوا رہے ہیں ،توہین عدالت کی متعدد درخواستیں مختلف عدالتوں میں زیر سماعت ہیں جنھیں یکجا کیا جائے، توہین آمیز بیانات نہ روکنے پر سیکرٹری پیمرا 29 مارچ کو ریکارڈ سمیت طلب

مریم نواز

لاہور( الاخبار نیوز) لاہور ہائی کورٹ نے میاں نواز شریف اور مریم نواز کے خلاف توہین عدالت کیس کی سماعت کے لیے لارجر بنچ تشکیل دینے کی سفارش کر دی، جسٹس مظاہر علی اکبر نقوی نے قرار دیا معاملہ اہم نوعیت کا ہے سماعت کے لے بڑا بنچ تشکیل دیا جائے۔تفصیلات کے مطابق لاہور ہائیکورٹ نے نواز شریف، مریم نواز کے خلاف توہین عدالت درخواستوں کا تفصیلی فیصلہ جاری کردیا، جسٹس مظاہر علی اکبر نقوی نے توہین عدالت کیس کا تحریری فیصلہ جاری کیا اور کیس چیف جسٹس ہائیکورٹ کو بھجوادیا۔عدالت نے چار صفحات پر مشتمل فیصلے میں قرار دیا ہے کہ عدلیہ کی توہین کا معاملہ انتہائی اہم اور سنگین ہے، جس کی سماعت کے لیے لارجر بنچ تشکیل دیا جائے۔عدالت نے قرار دیا کہ میاں نواز شریف اور مریم نواز کے خلاف توہین عدالت کی متعدد درخواستیں مختلف عدالتوں میں زیر سماعت ہیں جنھیں یکجا کیا جائے۔عدالت نے توہین آمیز بیانات نہ روکنے پر سیکرٹری پیمرا کو 29 مارچ کو ریکارڈ سمیت طلب کر لیا ہے۔یاد رہے کہ درخواست گزار اظہر صادق نے موقف اختیار کیا کہ پانامہ کیس کے بعد میاں نواز شریف اور مریم نواز سمیت ن لیگی رہنماوں نے عدلیہ کے خلاف مہم شروع کر رکھی ہے اور وہ عدلیہ کو متنازعہ بنانا چاہتے ہیں۔درخواست گزار کا کہنا تھا کہ نواز شریف،مریم نوازمسلسل عدلیہ کی توہین کر رہے، پیمرا نےعدالتی حکم کے باوجود کوئی کارروائی نہیں کیے، لہذا پیمرا کو میاں نواز شریف اور مریم نواز کے بیانات پر پابندی عائد کرنے کا حکم دیا جائے۔

Scroll To Top