ایران نے ایٹم بم بنایا تو ہم بھی ایسا ہی کریں گے، سعودی ولی عہد

cیہ منظوری ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کے دورہ امریکا سے چند روز قبل دی گئی ہے، فوٹو: انٹرنیٹ

ریاض: سعودی عرب کی کابینہ نے جوہری توانائی پروگرام کی قومی پالیسی  کی منظوری دے دی ہے جب کہ سعودی ولی عہد محمد بن سلمان کا کہنا ہے کہ اگر ایران نے نیوکلیئر بم بنایا تو ہم بھی ایسا ہی کریں گے۔

عرب میڈیا کے مطابق سعودی عرب کی کابینہ  کی جانب سے جوہری توانائی پروگرام کی منظوری پرامن مقاصد کے لیے دی گئی ہے۔ یہ منظوری ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کے دورہ امریکا سے چند روز قبل دی گئی ہے۔ شہزادہ محمد بن سلمان  19 سے 22 مارچ تک امریکا کا تین روزہ دورہ کریں گے جس میں وہ امریکا سے جوہری معاہدہ طے کرنے کے لیے بات چیت کریں گے۔

عرب میڈیا کا کہنا ہے کہ سعودی کابینہ کا منظور شدہ جوہری توانائی پروگرام بین الاقوامی معاہدوں کے مطابق انجام  دیا جائے گا۔

دوسری جانب ایک امریکی ٹی وی کو انٹرویو دیتے ہوئے سعودی ولی عہد محمد بن سلمان نے کہا ہے کہ اگر ایران نے جوہری بم بنایا تو سعودی عرب بھی ضرور ایٹم بم بنائے گا۔

محمد بن سلمان کا کہنا ہےکہ سعودی عرب کسی قسم کا نیوکلیئر بم بنانا نہیں چاہتا تاہم اس بات میں کوئی شک نہیں کہ اگر ایران نے نیوکلیئر بم بنالیا تو ہم بھی جلد از جلد ایسا ہی کریں گے۔

واضح رہے کہ سعودی عرب دنیا میں تیل برآمد کرنے والے ممالک میں شامل ہے اور وہ اپنے اصلاحاتی پروگرام ویژن 2030ء کے تحت بتدریج تیل کی معیشت پر انحصار کم کررہا ہے۔

Scroll To Top