چیئر مین سینٹ بلوچستان اور ڈپٹی فاٹا سے ہونا چاہئے، پی ٹی آئی کا فیصلہ

  • بلوچستان اورفاٹا کئی سالوں سے احساس محرومی کا شکار ہیں،تحریک انصاف کے ارکان پیپلزپارٹی یا ن لیگ کو ووٹ نہیں دینگے ،دونوں جماعتوں کے ادوار میں صوبوں کا احساس محرومی بڑھا ہے، اب انہیں قربانی دینا ہوگی
  • اگر ن لیگ کا چیئرمین سینٹ بن گیا تو یہ اپنے کرپٹ ٹبر کو بچانے کےلئے قانون ساز ی کر سکتے ہیں جس سے ملک کو نقصان ہو سکتا ہے ، ان لوگوں نے پہلے ہی ایک مجرم کو پارٹی قائد بنا رکھا ہے ، عمران خان کی پریس کانفرنس
اسلام آباد:۔ چیئرمین تحریک انصاف عمران خان کور گروپ اجلاس کی صدارت کر رہے ہیں

اسلام آباد:۔ چیئرمین تحریک انصاف عمران خان کور گروپ اجلاس کی صدارت کر رہے ہیں

اسلام آباد (این این آئی) چیئرمین تحریک انصاف عمران خان نے چیئرمین سینیٹ کےلئے بلوچستان اور ڈپٹی چیئرمین کےلئے فاٹا کے امیدوار کی حمایت کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ بلوچستان اورفاٹا کئی سالوں سے احساس محرومی کا شکار ہیں،تحریک انصاف کے ارکان پیپلزپارٹی یا (ن) لیگ کو ووٹ نہیں دینگے ،دونوں جماعتوں کو اب قربانی دینا چاہئے، یہ دونوں پاور میں رہیں ان کے دور میں احساس محرومی بڑھا ہے۔جمعہ کو تحریک انصاف کی کور کمیٹی کے اجلاس کے بعد پریس کانفرنس کرتے ہوئے چیئرمین پاکستان تحریک انصاف عمران خان نے کہا کہ ہم چیئرمین سینیٹ کیلئے بلوچستان اور ڈپٹی چیئرمین کیلئے فاٹا اراکین کی حمایت کا اعلان کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ فاٹا والوں نے بہت قربانیاں دی ہیں، بلوچستان اورفاٹا کئی سالوں سے احساس محرومی کا شکار ہیں، اس لئے چیئرمین سینیٹ بلوچستان اور فاٹا سے ڈپٹی چیئرمین ہونا چاہئے یہ ان کی قربانیوں کا اعتراف ہے۔انہوں نے کہا کہ ہمیں امید ہے کہ پیپلزپارٹی بھی اس کی حمایت کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ پرویز خٹک، جہانگیرترین، اسد عمر اور دیگر رہنما فاٹا سینیٹرز سے ملاقات کر رہے ہیں، پی ٹی آئی وفد بلوچستان اور فاٹا سینیٹرز سے اس فیصلہ پر کھڑا رہنے کا کہے گا ۔انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی کی کور کمیٹی کا یہ متفقہ فیصلہ ہے کہ ہمارے سینیٹرز پیپلزپارٹی اور (ن) لیگ کو ووٹ نہیں دیں گے ۔انہوں نے کہا کہ اب مسلم لیگ (ن) اور پیپلز پارٹی کو قربانی دینی چاہئے کیونکہ یہ دونوں جماعتیں ہمیشہ پاور میں رہی ہیں اور انہی کے دور میں احساس محرومی بڑھا ہے۔انہوں نے کہا کہ ہم (ن) لیگ کا چیئرمین سینیٹ اس لئے بھی نہیں چاہتے کہ اگر ان کا چیئرمین بن گیا تو پاکستان کو نقصان ہوگا، کہیں یہ اپنے خاندان کو بچانے کےلئے کوئی قانون پاس نہ کردیں، ان لوگوں نے ایک مجرم کو پارٹی کا صدر بھی بنایا ہے۔

Scroll To Top