پیمرا نے ٹی وی اور ایف ایم ریڈیوز پر انڈین مواد نشر کرنے پر مکمل پابندی عائد کر دی

  • پیمرااتھارٹی نے اپنے فیصلے کے ذریعے 2006ءمیںانڈیا کو دی گئی یکطرفہ رعایت کو منسوخ کر دیا
  • خلاف ورزی کرنے والے ٹی وی چینلز اور ایف ایم ریڈیوزکا لائسنس بغیر شوکاز نوٹس جاری کئے معطل کر دیا جائے گا

Image result for ‫پیمرا‬‎

اسلام آباد (این این آئی)پیمرا اتھارٹی کا 120واں اجلاس بدھ کو ہیڈکوارٹرز میں منعقد ہوا۔اتھارٹی نے سیٹلائٹ ٹی وی چینلز اور ریڈیو پر انڈین مواد نشر کرنے پر مکمل پابندی عائد کر دی۔ اتھارٹی نے یہ فیصلہ حکومت پاکستان کی جانب سے سمری کا جواب موصول ہونے پر کیا جس میں حکومت پاکستان نے اتھارٹی کو مکمل اختیارات تفویض کیے کہ وہ انڈین مواد سے متعلق فیصلہ سازی کرنے میں مکمل با اختیار ہے لہٰذا اتھارٹی نے اپنے فیصلے کے ذریعے 2006ءمیں پرویز مشرف حکومت کی جانب سے انڈیا کو دی گئی یکطرفہ رعایت کو منسوخ کر دیا۔ اس پابندی کا اطلاق21اکتوبر2016ءکو سہ پہر3بجے ہو جائے گا اور خلاف ورزی کرنے والے ٹی وی چینلز اور ایف ایم ریڈیوزکا لائسنس بغیر شوکاز نوٹس جاری کئے معطل کر دیا جائے گا۔ اجلاس میں 15اکتوبر2016ءرات12بجے کے بعد سے غیر قانونی انڈین ڈی ٹی ایچ اور انڈین مواد کے خلاف جاری مہم کے بارے میں آگاہ کیا گیا اور ملک کے مختلف شہروں میں ہونے والی کاروائیوں کی تفصیل دی۔ اتھارٹی ممبران نے کامیاب مہم پر تمام پیمرا افسران اور سٹاف کی کاوشوں کو سراہا اور اس کاروائی کو جاری رکھنے کا عندیہ دیا۔اتھار ٹی نے وفاقی اور صوبائی حکومتوں، حکومت آزاد کشمیر، پی ٹی اے، ایف بی آر، ایف آئی اے اور پولیس کابھی شکریہ ادا کیا جن کے تعاون سے یہ محنت کامیاب ہوئی۔چیئرمین پیمرا ابصار عالم کی زِیر صدارت اجلاس میں سیکریٹری داخلہ عارف احمد خان،سیکریٹری انفارمیشن صباءمحسن،چیئرمین ایف بی آرناصر محمدخان،چیئرمین پی ٹی اے ڈاکٹر اسماعیل شاہ، شاہین حبیب اللہ (ممبر خیبر پختونخوا) نرگس ناصر ( ممبر پنجاب)سرفراز خان جتوئی (ممبر سندھ) نے شرکت کی۔

Scroll To Top