والدین کے ساتھ کھانا کھانے والے بچے زیادہ صحت مند ہوتے ہیں

مانٹریال یونیورسٹی کے ماہرین نے کہا ہے کہ والدین اپنے بچوں کے ساتھ کھانا کھائیں تو اس کے بچوں پر دور رس اثرات مرتب ہوتے ہیں۔ فوٹو: فائل

مانٹریال یونیورسٹی کے ماہرین نے کہا ہے کہ والدین اپنے بچوں کے ساتھ کھانا کھائیں تو اس کے بچوں پر دور رس اثرات مرتب ہوتے ہیں۔ فوٹو: فائل

اونٹاریو: ایک حالیہ مطالعے میں انکشاف ہوا ہے کہ اپنے والدین کے ساتھ کھانا کھانے والے بچے دیگر بچوں کے مقابلے میں زیادہ صحت مند رہتے ہیں اور ان کی دماغی صلاحیتیں بھی بہتر ہوتی ہیں۔

کینیڈا میں بچوں کی نفسیات کے ماہرین نے 5 ماہ سے 10 سال تک کی عمر کے بچوں کا جائزہ لینے کے بعد اس بات کا انکشاف کیا ہے کہ باقاعدگی سے والدین کے ساتھ دسترخوان پر بیٹھنے والے بچوں کے جسم و دماغ پر اس کے اچھے اثرات مرتب ہوتے ہیں، خاص طور پر دس سال کے بچے اگر والدین کے ساتھ کھانا کھائیں تو وہ اچھی طرح کھانا کھاتے ہیں اور مضر مشروبات مثلاً سافٹ ڈرنکس کی جانب کم متوجہ ہوتے ہیں۔

اس سروے کے بعد کینیڈا کے ماہرین نے کہا ہے کہ والدین اپنے بچوں کو ساتھ بٹھا کر کھانا کھانے کے عمل کو بچوں کی زندگی میں سرمایہ کاری تصور کریں، اس کی وجہ یہ ہے کہ کھاتے وقت خوشیوں پر مبنی باتیں ہوتی ہیں اور بچے والدین سے جذباتی طور پر قریب ہوجاتے ہیں۔

Scroll To Top