جمہوریت میری ` کاشف عباسی کی زرداری صاحب کی اور میاں نوازشریف کی ضرورت ہے

aaj-ki-bat-logo

میں ایک قلمکار ہوں اس لئے مجھے جمہوریت بہت اچھی لگتی ہے۔۔۔ اس لئے اچھی لگتی ہے کہ جو کچھ میرا جی چاہتاہے وہ آزادی کے ساتھ لکھتا ہوں۔۔۔ کاشف عباسی ایک اینکر پرسن اور تجزیہ کار ہیں۔۔۔ اس لئے انہیں بھی جمہوریت بہت اچھی لگتی ہے اس لئے اچھی لگتی ہے کہ وہ آزادی کے ساتھ وہ سب کچھ بول جاتے ہیں جو وہ بولنا چاہتے ہیں۔۔۔ جمہوریت رﺅف کلاسرا او ر عامر متین جیسے بلند پایہ صحافیوں سے لے کر جاوید چوہدری ` طلعت حسین ` حامد میر ` محمد مالک اور سب سے بڑھ کر ڈاکٹر شاہد مسعود جیسے باکمال تجزیہ کاروں ۔۔۔ سب کو اچھی لگتی ہے کیوں کہ اُن کے وجود کا انحصار ہی جمہوریت کی بقاءپر ہے ۔۔۔ جمہوریت نہ ہو تو شاید الفاظ اور آواز کی جادوگری دکھانے والا کوئی بڑا نام ہی نہ ہو۔۔۔یہ تو تصویر کا ایک رخ ہے۔۔۔ تصویر کا دوسر ا رخ یہ ہے کہ جمہوریت نہ ہو تو نہ یہاں آصف علی زرداری ہو۔۔۔ نہ میاں نوازشریف ہو۔۔۔ نہ مولانا فضل الرحمان ہو۔۔۔ نہ محمود خان اچکزئی ہو نہ اسفند یار ولی خان ہو۔۔۔ اور نہ ہی ان کے سائے میں پروان چڑھنے والے ” خادمانِ عوام“ ہوں۔۔۔ جمہوریت ہے تو وہ سب کچھ ہے جو ہمیں آج کے پاکستان میں نظر آرہا ہے۔۔۔
ہمیں فخر ہے کہ پاکستان میں جمہوریت ہے۔۔۔ ہمیں فخر ہے کہ ایک جمہوری ملک ہونے کی بدولت ہم خود کو امریکہ ` برطانیہ ` فرانس اور دیگر جمہوری ممالک کی صف میں شامل سمجھتے ہیں۔۔۔
تصویر کا ایک تیسرا رخ بھی ہے۔۔۔
چین جمہوریت نہیں۔۔۔ چین میں صرف ایک سیاسی جماعت ہے ۔۔۔صرف اسی جماعت کی حکومت ہے۔۔۔ کل بھی تھی ۔۔۔ آج بھی ہے اور شاید آئندہ بھی رہے گی۔۔۔
چین کو بجا طور پر ایک مطلق العنان حکومت کہا جاسکتا ہے مگر یہ مطلق العنانی کسی فرد کی نہیں حکمران سیاسی جماعت کی ہے جو ہر دس برس کے بعد ملک کا ایک نیا قائد اور سربراہ منتخب کرتی ہے۔۔۔ اگر جمہوریت کو ہی ترقی اور خوشحالی کی شرطِ اول سمجھا جائے تو چین کو بڑا پسماندہ ملک ہونا چاہئے۔۔۔ لیکن حقیقت یہ ہے کہ چین ایک جماعت کی مطلق العنانی کے تحت پسماندگی کی انتہا سے ترقی کی منزل کی طر ف اس برق رفتاری کے ساتھ بڑھا ہے کہ آج وہ دنیا کی دوسری بڑی طاقت ہے۔۔۔ کیا یہ حقیقت نہیں کہ دنیا کی تمام جمہوریتیں ایک قدم پیچھے ہٹی ہیں اور چین کئی قدم آگے بڑھا ہے۔۔۔
اس بات کا مطلب کیا ہوا۔۔۔؟
جمہوریت ملک کی نہیں۔۔۔ ملک میں پائے جانے والے ان لوگوں کی ضرورت ہے جو جمہوریت کے بغیر اپنا وجود نہ تو قائم رکھ سکتے ہیں۔۔۔ اور نہ منوا سکتے ہیں۔۔۔

Scroll To Top