عقیدئہ ختم نبوت نے مسلم اُمہ کو یک جان کر دیا ‘ ختم نبوت کانفرنس

  • نئی نبوت پر ایمان لانے کے بعد انکا اسلام اور مسلمانوں سے کوئی تعلق باقی نہیں رہا‘ اعلامیہ

ختم نبوت کانفرنس

لاہور (صباح نیوز)عالمی مجلس تحفظ ختم نبوت یونٹ شاہ عالم رنگ محل کے زیراہتمام ختم نبوت کانفرنس جامع مسجد خلفاءراشدین میں بزرگ عالم دین مولانا قاری مومن شاہ کی صدارت میں منعقد ہوئی۔کانفرنس میں مجلس تحفظ ختم نبوت لاہور کے سرپرست مولانا مفتی نعیم الدین،شیخ الحدیث مولان زاہدالراشدی،مولانا کفیل خان،پیرمیاں رضوان نفیس،قاری جمیل الرحمن اختر،قاری علیم الدین شاکر،مبلغ ختم نبوت لاہور مولانا عبدالنعیم ،مولاناعبدالشکورحقانی،قاری سید انوارالحسن شاہ،قاری عبدالغفارڈیروی،مولانا سید ضیاءالحسن شاہ،تاجربرادری کے رہنماو¿ں محمدکاشف،محمدشکیل،حافظ محمدصدیق،محمدصابرڈار،قاری فاروق عباسی،قاری عمرفاروق سمیت کثیرتعدادمیں عوام نے شرکت کی۔مقررین نے کہاکہ اسلام کے بنیادی عقائد ہیں جن کومانے بغیر کوئی شخص مسلمان نہیں ہوسکتا۔ ان بنیادی عقائد میں ختم نبوت کا عقیدہ اساسی حیثیت رکھتا ہے، جس پر ہر مسلمان کا ایمان ہونا ضروری ہے۔ منکرین ختم نبوت نے ایک نئے نبی کو مان کر خود اپنے راستے مسلمانوں سے جدا کرلئے ہیں، نئی نبوت پر ایمان لانے کے بعد ان کا اسلام اور مسلمانوں سے کوئی تعلق باقی نہیں رہا۔ آج قادیانی پوری دنیا خصوصاًمغربی دنیا میں یہ پروپیگنڈا کررہے ہیں کہ پاکستان میں منکرین ختم نبوت کے حقوق پامال کردیئے گئے ہیں، ان کے شہری حقوق معطل کردیئے گئے، اور انہیں پاکستان میں آزادی سے رہنے نہیں دیا جارہا۔ان کے پروپیگنڈے اور الزام میں کوئی حقیقت نہیں۔ البتہ آئین اور دستور یہ کہتا ہے کہ جب تم اپنے عقائد اور نظریات کی بنیاد پر مسلمان نہیں اوراسلام سے تمہارا کوئی تعلق نہیں تو تمہیں اپنے آپ کو مسلمان کہلانے اور اسلام کی وہ اصطلاحات جو مسلمانوں کی خاص پہچان ہیں ان کو استعمال کرنے کا کوئی حق نہیںقادیانی اسلام اور مسلمانوں کا نام استعمال کرکے مسلمانوں کے حقوق غصب کرنے کی ناکام کوشش کررہے ہیں اور ہم کبھی قادیانی گروہ کو مسلمانوں کے حقوق غصب کرنے کی اجازت نہیں دیں گے۔مولانا زاہدالراشدی نے کہا کہ قادیانی مرزا غلام احمد کو نبی مانتے ہیں، اس لئے ان کا مسلمانوں سے کوئی تعلق نہیں اور نہ ان کا مذہب اسلام ہے، اس لئے قادیانیوں کو اسلام کا نام استعمال کرنے کی اجازت نہیں دی جاسکتی۔مولانا نعیم الدین نے کہا کہ حضور اکرم صلی اللہ علیہ وسلم سے محبت ایمان کی علامت ہے اور عالمی مجلس تحفظ ختم نبوت کا ہر کارکن، امت مسلمہ کا ہر فرد حضور اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کی عزت و ناموس کی حفاظت کے لئے اپنا سب کچھ قربان کرسکتا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ عقیدئہ ختم نبوت اسلام کے بنیادی عقائد میں سے ہے اس پر ایمان لائے بغیر کوئی شخص مسلمان نہیں ہوسکتا۔ مولانا کفیل خان نے کہا کہ قادیانی ہر جگہ اپنے آپ کو مسلمان ظاہر کرکے سادہ لوح مسلمانوں کو گمراہ کررہے ہیں ، عقیدئہ ختم نبوت کو نہ ماننے والا دائرئہ اسلام سے خارج ہے، اس لئے ان کا مسلمانوں سے کوئی تعلق نہیں۔مولانا عبدالنعیم نے کہا کہ ختم نبوت دین کا بنیادی عقیدہ ہے اس عقیدہ پر اسلام کی پوری عمارت قائم ہے اور سب سے بڑھ کر یہ کہ اس عقیدہ کی وجہ سے امت کا امت پنا محفوظ ہے، عقیدہ ختم نبوت انسانیت پر ایک احسانِ عظیم ہے۔ ۔قاری علیم الدین شاکرنے کہاکہ قادیانیت اسلام کے خلاف سازش اور نبوت محمدی کے خلاف بغاوت ہے، اس نے ختم نبوت کا انکار کرکے دین اسلام کے اس سرحدی خط کو منقطع کیا ہے جو اس امت کو دوسری امتوں سے ممتاز کرتا ہے۔قاری جمیل الرحمن نے کہا اس عظیم الشان کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ امت مسلمہ کا متفقہ عقیدہ ہے کہ مرزائی اور قادیانی مرزا غلام احمد قادیانی کو نبی ماننے کی وجہ سے اسلام کے دائرے سے خارج ہیں۔ سب سے پہلے کشمیر اسمبلی نے قادیانیوں کو غیر مسلم قرار دیا۔ 7ستمبر1974ءکو پاکستان کی قومی اسمبلی نے منکرین ختم نبوت کو متفقہ طور پر غیر مسلم اقلیت قرار دیا۔ فیصلہ میں لکھا کہ قادیانیوں کا اسلام سے کوئی تعلق نہیں۔
#/S

Scroll To Top