نیا’این آر او‘ نہیں آئیگا، آیا تو قوم کو سڑکوں پر لاﺅں گا: عمران خان

  • شاہد خاقان عباسی 300 ارب روپے کی چوری کرنے والے نواز شریف کو اپنا وزیر اعظم تسلیم کرتے ہےں ریاست عوام کے جان و مال کے تحفظ کےلئے ہوتی ہے لیکن یہاں ریاست ایک کرپٹ وزیر اعظم کے دفاع میں مصروف ہے ، شہباز شریف کے خلاف حدیبیہ پیپر ملز کیس کھولا جائے
  • ن لیگ اور پیپلزپارٹی نورا کشتی میں مصروف ہےں،جب زرداری صدر تھے تو اس وقت شریف برادران انکے خلاف بیان بازی میں مصروف رہتے تھے، اب عا م انتخابات قریب آتے ہی پیپلزپارٹی نے وہی کھیل کھیلنا شروع کر دیا ہے، چیئرمین پی ٹی آئی کی صحافیوں سے گفتگو
کراچی، پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان میڈیا سے گفتگو کر رہے ہیں

کراچی، پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان میڈیا سے گفتگو کر رہے ہیں

سیہون (آن لائن) تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا ہے کہ سابق صدر مشرف کو کوئی حق نہیں پہنچتا کہ وہ نواز شریف اور آصف علی زرداری کو این آر او دیتا لیکن اس مرتبہ کرپٹ مافیاکے خلاف پوری قوم ہمارے ساتھ ہے اگر این آر او ہوا تو پورے پاکستان کو سڑکوں پر نکالوں گا ۔ سپریم کورٹ سے قوم مطالبہ کرتی ہے کہ شہباز شریف کے خلاف حدیبیہ پیپر مل کیس کھولا جائے ۔ آصف زرداری کا نواز شریف کی گرفتاری کا مطالبہ قیامت کی نشانی ہے ۔ زرداری نے نواز شریف سے بھی زیادہ پیسے چوری کئے ۔ آصف زرداری اور فریال تالپور اپنے غلط کاموں کے لئے سندھ پولیس کو استعمال کرتے ہیں۔عام انتخابات 2018 میں پی ٹی آئی سندھ میں تبدیلی لا کر سالوں بعد پیپلزپارٹی کو شکست دے گی۔ ان خیالات کا اظہار عمران خان نے سیہون میں صحافیوں سے گفتگو کے دوران کیا ۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ روز ہمیں شہر سے پانچ کلو میٹر دور جلسے کی اجازت دی گئی تاکہ جلسے کو ناکام بنایا جا سکے لیکن ہمارے جلسوں میں لوگ دور دور سے آتے ہیں یہ کوئی بلاول بھٹو کے جلسے نہیں جس میں پوری دنیا سے لوگوں کو گاڑیوں میں بھر کر لایا جائے ۔عمران خان نے کہا کہ گزشتہ روز شہباز قلندر کے مزار پر حاضری دینے کے لئے مجھے روک دیا گیا کبھی بھی پاکستان میں نہیں دیکھا کہ کسی درگاہ پر حاضری کے لئے کسی پر پابندی لگائی گئی ہو ۔لیکن وہاں پر بہانہ کیا گیا کہ مسلح افراد ہمراہ تھے ۔ میڈیا فوٹیج میں دکھا دے کہ مسلح افراد کہاں پر تھے ۔ عمران خان نے کہا کہ صوبہ سندھ کو مکمل طور پر پولیس سٹیٹ بنا دیا گیا ہے یہاں پر لوگوں کو کوئی آزادی نہیں بلکہ غلام بنایا ہوا ہے ان کے خلاف پولیس کو میلیٹنٹ ونگز بنا کر انتقامی کارروائیوں کے لئے استعمال کیا جاتا ہے اگر لوگوں کے اندر خوف ختم ہو گیا تو پھر سندھ ترقی کر جائے گا ۔ عمرن خان نے کہا کہ یہاں اگر سندھ میں خیبرپختونخوا کی طرح پولیس کو غیر جانبدار بنا دیا جائے تو پیپلزپارٹی ایک سیٹ بھی نہیں جیت سکے گی اور اس مرتبہ پیپلزپارٹی کو یہی خوف ہے کہ پی ٹی آئی سندھ میں تبدیلی لے کر آ رہی ہے انہوں نے کہاکہ سندھ میں عوام غریب سے غریب ہوتی جا رہی ہے اور آصف زرداری لانچوں سے پیسے دبئی منتقل کر رہا ہے لیکن اب میں سندھ میں جلسے کر کے عوام کو تبدیلی کے لئے تیار کروں گا اور انشاءاللہ سالوں بعد پی ٹی آئی پیپلزپارٹی کو سندھ میں شکست دے گی ۔ ایک سوال کے جواب میں عمران خان نے کہا کہ یہاں پر اداروں کے سربراہان کو مقرر کر کے حکومت نے اپنے مفادات کے لئے استعمال کیا ۔ یہاں پر صرف عدلیہ کے علاوہ اور کوئی غیر جانبدار ادارہ نہیں ۔ انہوں نے کہا کہ سندھ میں آصف زرداری اور فریال تالپور ہر غلط کام کرنے کے لئے پولیس کا استعمال کرتے ہیں ۔ الیکشن کمیشن کے سوال کے جواب میں عمران خان نے کہا کہ مجھ پر الیکشن کمیشن کو تنقید کا نشانہ بنانے کا الزام ہے ۔ 2013 ءکے عام انتخابات میں 22 جماعتوں نے الیکشن میں دھاندلی کا الزام لگایا تھا اگر میں پرامن احتجاج کر رہا ہوں تو اس پر کس حوالے سے دہشتگردی کا چارج لگا دیا گیا ہے یہ میرے جمہوری حق اور جمہوریت کی نفی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ شاہد خاقان عباسی 300 ارب روپے کی چوری کرنے والے نواز شریف کو اپنا وزیر اعظم تسلیم کرتا ہے حالانکہ سٹیٹ عوام کے جان و مال کے تحفظ کے لئے ہوتی ہے لیکن یہاں پر سٹیٹ ایک کرپٹ وزیر اعظم کے کیس کا دفاع کر رہی ہے جس میں ملک کے تمام وزراءبھی اس کرپٹ وزیر اعظم کے ساتھ کھڑے ہو گئے ہیں ۔ عمران خان نے ایک اور سوال کے جواب میں کہا کہ آصف زرداری کا نواز شریف کو گرفتاری کا مطالبہ کرنا قیامت کی نشانی ہے کیونکہ نواز شریف سے زیادہ تو زرداری نے پیسے چوری کئے ہیں لیکن حقیقت میں یہ ایک نورا کشتی ہے جب زرداری صدر تھا تو اس وقت شریف برادران زرداری کے خلاف یہی کھیل کھیل رہے تھے اور شہباز شریف نے کہا تھا کہ آصف زردرای کا پیٹ پھاڑ کر پیسے نکالیں گے اور اس کو گلیوں میں گھسیٹیں گے اب ٹھیک اسی طرح پیپلزپارٹی چار سال چپ رہی اور اب الیکشن 2018 قریب آتے ہی پیپلزپارٹی نے نورا کشتی شروع کر دی ہے ۔

Scroll To Top