نیب کا شریف برادران کیخلاف زیر التوا انکوائریز جلد مکمل کرنیکا فیصلہ

  • نواز شریف کےخلاف 14 جبکہ شہباز شریف کےخلاف 2 انکوائریز زیر التوا ہیں،سابق وزیراعظم کےخلاف غیرقانونی تقرریوں، رائے ونڈ روڈ کی تعمیر اور لاہور ڈیولپمنٹ اتھارٹی کے پلاٹوں کی غیرقانونی الاٹمنٹ سے متعلق انکوائریز زیر التوا ہیں
  • شہباز شریف کےخلاف رائے ونڈ روڈ، نواں کوٹ اور ایل ڈی اے کے پلاٹوں کی غیر قانونی الاٹمنٹ سے متعلق انکوائریز زیر التوا ہےں، شریف خاندان کےخلاف اسلام آباد / راولپنڈی کی احتساب عدالت میں 4 مزید ریفرنس بھی دائر کیے جائیں گے

nabنیبلاہور(مانیٹرنگ ڈیسک) قومی احتساب بیورو (نیب) نے سابق وزیراعظم نواز شریف اور وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف کے خلاف 16 زیر التوا انکوائریوں کو جلد مکمل کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے ۔واضح رہے کہ نیب میں سابق وزیراعظم میاں محمد نواز شریف کے خلاف 14 جبکہ وزیراعلیٰ پنجاب میاں محمد شہباز شریف کے خلاف 2 انکوائریز زیر التوا ہیں۔سابق وزیراعظم نوازشریف کے خلاف وفاقی تحقیقاتی ادارے (ایف آئی اے) میں غیرقانونی تقرریوں، رائے ونڈ روڈ کی تعمیر اور لاہور ڈیولپمنٹ اتھارٹی (ایل ڈی اے) پلاٹوں کی غیرقانونی الاٹمنٹ سے متعلق انکوائریز زیر التوا ہیں۔دوسری جانب وزیراعلیٰ شہباز شریف کے خلاف رائے ونڈ روڈ اور نواں کوٹ میں پلاٹ نوازنے سے متعلق انکوائری زیر التوا ہے۔ایل ڈی اے کے پلاٹوں کی غیر قانونی الاٹمنٹ سے متعلق وزیراعلیٰ شہباز شریف کے خلاف 1 جبکہ نواز شریف کے خلاف 12 انکوائریز زیرالتوا ہیں۔واضح رہے کہ شریف برادران کے خلاف انکوائریز کا آغاز جلاوطنی اختیار کرنے سے قبل کیا گیا تاہم ان کے جدہ جانے کے بعد یہ انکوائریاں بند کردی گئیں، جنہیں 12 اپریل 2006 کو دوبارہ شروع کیا گیا۔نیب کی جانب سے جاری کردہ اعلامیے کے مطابق نواز شریف کو سپریم کورٹ کی جانب سے نا اہل قرار دیے جانے کے بعد نیب کا اجلاس منعقد ہوا جس میں فیصلہ کیا گیا کہ عدالت کی جانب سے مقررہ وقت کے اندر شریف خاندان کے خلاف اسلام آباد / راولپنڈی کی احتساب عدالت میں 4 مزید ریفرنس دائر کیے جائیں۔

Scroll To Top