نوازشریف بے قصور۔۔۔

aaj-ki-baat-new-21-aprilمیاں نوازشریف کا نام پاناما لیکس میں صرف اس لئے آیا کہ وہ حسین نواز `حسن نواز اور مریم نواز کے والد ہیں۔۔۔
ورنہ وہ ہر لحاظ سے صادق و امین ہیں۔۔۔ انہوں نے ہمیشہ رزقِ حلال کمایا ہے اور رزق ِ حلال کھایا ہے۔۔۔ رزقِ حرام سے وہ اُتنی ہی نفرت کرتے ہیں جتنی نفرت انہیں اپنے اختیارات اپنے ` اپنے خاندان اور اپنے اقرباءکے مفادات کے فروغ کے لئے استعمال کرنے سے ہے۔۔۔ انہوں نے کافی عرصہ پہلے واضح طور پر یہ اعلان کردیا تھا کہ وہ اپنے خاندانی کاروبار اور بزنس وغیرہ سے الگ ہوچکے ہیں ` کیوں کہ وہ وزیراعظم بننے کے بعد کاروبار سے کسی بھی قسم کا تعلق رکھنا گناہ عظیم سمجھتے ہیں ۔۔۔ تمام شواہد یہ ثابت کررہے ہیں کہ میاں نوازشریف نے اپنے اس عہد پر سختی سے عمل کیا ہے۔۔۔
اگر ان کے خاندان کا کاروبار مسلسل پھلتا پھولتا رہا ہے اور اگر ان کی اولاد عہدِ طفولیت میں ہی دولتمند بننے کے اَسرار ورموز پر عبور رکھتی تھی تو اسے میاں نوازشریف کے خلاف استغاثہ نہیں بنایا جاسکتا۔۔۔
جہاں تک باہمی طور پر متضاد بیانات دینے کا تعلق ہے تو میاں صاحب کے خاندان کے لوگ بار بار ایک ہی بیان دیتے رہنے کے پابند نہیں بنائے جاسکتے۔۔۔ اگر پاکستان کے بیس کروڑ کے بیس کروڑ عوام سچ بولنے کے پابند بنائے جاسکتے تو وہ جھوٹ جو میاں خاندان نے بولے ہیں قابلِ گرفت قرار پاسکتے تھے۔۔۔
آپ یقینا یہ سوچ رہے ہوں گے کہ یہ میں کیا اول فول بک رہا ہوں تو میرا مقصد آپ سے صرف یہ سوال پوچھنا ہے کہ اگر پاکستان کی اعلیٰ ترین عدالت سے ایسا کوئی فیصلہ جاری ہوجائے تو کیا آپ کو اپنے کانوں اور اپنی آنکھوں پر یقین آئے گا۔۔۔؟
جہاں تک مسلم لیگ (ن)کے لیڈروں کا تعلق ہے وہ ایسے ہی کسی فیصلے کے متمنی اور طلب گار ہیں۔۔۔
کاش کہ وہ اس حقیقت کو بھی مدنظر رکھتے کہ ہمارے یہ فاضل جج صاحبان رحم بھرا دل رکھنے کے ساتھ ساتھ ذمہ دار ضمیر بھی رکھتے ہیں۔۔۔

Scroll To Top