جنرل صاحب۔۔۔کیا ہم امید کریں کہ آپ سارے فسادیوں کو پہچانتے ہیں؟

kuch khbaroo ky bary me

kuch khbaroo ky bary me

میں نے ٹی وی آن کیا تو زرداری صاحب کسی تقریب سے خطاب فرما رہے تھے۔ کہہ رہے تھے کہ پاکستان کو بچانے کی نوبت آئی تو میں نے ”پاکستان کھپے“ کا نعرہ لگا کر پاکستان کو بچا لیا۔ یہ اسلام کے ٹھیکیداروں کا ملک نہیں۔۔۔“ وہ اتنا ہی کہہ پائے تھے کہ میں نے غصہ سے ٹی وی بند کر دیا۔

زرداری صاحب! آپ کے نعرے”پاکستان کھپے“ نے اس ملک کو نہیں بچایا۔ اس ملک کے محافظ موجود ہیں۔ اپنے اس ”نعرے“ کی آپ نے بڑی بھاری قیمت وصول کی ہے۔ آپ نے یہ نعرہ بلند کرنے کے لئے ایک سکرین پلے کا اہتمام کیا تھا جس کی تفصیلات میں ، میں نہیں جاو¿ں گا مگر آپ سے درخواست کروں گا کہ آپ اسلام کا نام اس قدر حقارت سے مت لیا کریں۔ یہ ملک آپ کے لئے نہیں بنا تھا۔ ان لوگوں کے لئے بنا تھا جو اذان کی آواز پر مسجد کا رخ کرتے ہیں۔ مگر آپ سجدہ سونے کی اینٹوں کو دیتے ہیں۔ اگر آپ ذرا سا وقت اسلام کو سمجھنے کے لئے نکالیں تو آپ کو معلوم ہو جائے گا کہ جو لوگ سونے کی اینٹیں جمع کرتے ہیں انہیں جہنم کی دہکتی آگ میں سونے کی اینٹوں سے داغا جائے گا۔
آج آرمی چیف کے منظور کردہ سلوگن ”سب کا پاکستان“ ملک کے چپے چپے میں گونجتا رہا۔ مگر میں یہاں ہلکا پھلکا سا اختلافی نوٹ درج کر رہا ہوں۔”سب“ میں وہ لوگ نہیں ہیں جنہوں نے دونوں ہاتھوں سے اِس ملک کو لوٹا ہے، جو عوام کو غربت و افلاس کے دہانے پر لے آئے ہیں، جن کی وجہ سے پاکستان 75ارب ڈالر کے غیر ملکی قرضوں کے بوجھ تلے سسک رہا ہے، اور جو اُن دہشتگردوں سے کم تر فسادی نہیں ہیں جو دشمنوں کے ایجنڈے پر کام کرتے ہوئے وطنِ عزیز میں آگ او ر خون کا کھیل کھیل رہے ہیں۔
آرمی چیف صاحب۔۔۔کیا ہم امید کریں کہ آپ سارے فسادیوں کو پہچانتے ہیں؟

Scroll To Top