پی ایس ایلII- فائنل کا آنکھوں دیکھا حال

احمد سلمان انور

احمد سلمان انور

ماضی میں کبھی کسی کرکٹ میچ کے لئے ایسے انتظامات دیکھنے میں نہیں آئے جیسے اتوار کے روز لاہور کے روز قذافی اسٹیڈیم میں کھیلے جانے والے پاکستان سپر لیگ کرکٹ کے فائنل میچ کے لئے کئے گئے ہیں۔ حکومت کی جانب سے کھلاڑیوں کو مکمل فول پروف سیکورٹی مہمان ٹیموں کو دی گئی ۔یہ پہلا موقع ہے کہ ملکی اور غیر ملکی کھلاڑیوں پر مبنی کرکٹ ٹیمو ں کو پانچ سطحوں کی سیکورٹی دی گئی ہے۔ پاکستان سپر لیگ سیزن IIکے فائنل کی اختتامی تقریب کے آغاز پر پاک فوج کے پیرا ٹروپرز نے اسٹیڈیم میں اترنے کا شاندار مظاہرہ کیا۔ پاک فوج کے جوانوں کے زمین پر اترتے ہی اسٹیڈیم پاکستان زندہ باد کے نعروں سے گونج اٹھتا۔ اس موقع پر دہشتگردی کیخلاف جنگ میں شہید ہونے والوں کو سلام اور خراج عقیدت بھی پیش کیا گیا۔
پاکستان سپر لیگ کی اختتامی تقریب کیلئے گراونڈ کے اندر سٹیج بنایا گیا تھا جس پر بڑا کرکٹ بیٹ، بال اور وکٹیں سجائی گئی تھیں۔ سٹیج پر فنکاروں نے چاروں صوبوں کے ثقافتی رنگ بکھیرے۔ علی ظفر، فاخر، شہزاد رائے، فرہاد ہمایوں، علی عظمت نے پرفارم کیا۔ شائقین کرکٹ نے پلے کارڈ اٹھا رکھے تھے جن پر لکھا تھا کہ ”دہشت گردی کی جنگ کرکٹ سے جیت لی گئی ہے، ہم پاکستان سے پیار کرتے ہیں“۔
پاکستان سپر لیگ فائنل کی افتتاحی تقریب کے موقع پر پی ایس ایل کے چیئرمین نے اپنا خطاب شروع کیا تو سٹیڈیم میں موجود کچھ شائقین نے “گو نواز گو” کے فلک شگاف نعرے لگانا شروع کر دئیے۔ نعروں کے شور میں بھی نجم سیٹھی نے اپنا خطاب جاری رکھا۔ ”گونواز گو “ گونج میچ کے مکمل دورانیہ میں وقتاً فوقتاً سنائی دیتی رہی۔ جس سے وزیراعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف صاحب اور حکومتی وزراءسخت تذبذب اور خفت کا شکار نظر آئے۔
وزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف بھی کرکٹ کے رنگ میں رنگ گئے۔ انہوں نے قذافی سٹیڈیم میں چوکوں اور چھکوں کی پریکٹس کی۔لیکن بعد ازاں ”گو نواز گو“ کے نعروں کی فلک شگاف گونج نے محترم شہباز شریف صاحب کے جوش و ولولہ کو بھی خاصہ ماند کر دیا تھا۔
شیخ رشید نے گذشتہ روز قذافی اسٹیڈیم میں عوام کے مابین بیٹھ کر پی ایس ایل کا فائنل میچ دیکھا جس پر شہریوں نے انہیں خوب داد دی۔
سراج الحق، جاوید ہاشمی ، خیبر پی کے کے گورنر اقبال ظفر جھگڑا، وزیر قانون پنجاب رانا ثناءاللہ، ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل آصف غفور، آئی جی پنجاب مشتاق سکھیرا، وفاقی وزیر بین الصوبائی رابطہ ریاض حسین پیرزادہ، وفاقی وزیر ریلوے سعد رفیق، ریحام خان، وفاقی وزیر برائے اطلاعات و نشریات مریم اورنگ زیب، گورنر گلگت بلتستان میر غضنفر علی خان نے بھی سٹیڈیم میں میچ دیکھا۔
پاکستان سپر لیگ کا دوسرا ایڈیشن پشاور زلمی نے جیت لیا ہے جب کہ پشاور زلمی کے کپتان ڈیرن سیمی فائنل میچ کے بہترین کھلاڑی قرار پائے۔ اس موقع پر رمیز راجہ سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ہمارے باو¿لرز نے کوئٹہ کی ٹیم کو دباو¿ میں رکھا اور فتح میں عمدہ کردار ادا کیا جب کہ جیت پاکستانی عوام کے نام کرتا ہوں۔ انہوں نے شاہدآفریدی کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ لالہ نے میرے لئے پشاور زلمی کی کپتانی چھوڑی ان کی جانب سے مجھے کپتان بنوانا بڑی بات تھی۔
٭٭٭٭٭

Scroll To Top