صدقے واری 16-10-2009

” ہم آپ کو گولی بڑی نیک نیتی کے ساتھ مار رہے ہیں ہمارا قطعاً ارادہ نہیں کہ اس گولی سے آپ کو کوئی نقصان پہنچے۔ اگر نقصان پہنچ گیا تو اس کی ذمہ داری ہم پر ہوگی۔ گولی مارنے کا فیصلہ ہمارا ہے۔ آپ نے ہم سے نہیں کہا کہ آپ کو گولی ماریں۔ آپ کی کوئی ذمہ داری نہیں“
یہ اس وضاحت کا مطلب ہے جو کانگریس کے منظور شدہ بل کے ساتھ نتھی کی جائے گی ۔ صدر اوبامہ کے دستخطوں کے بعد یہ بل قانون بن جائے گا۔ اگرچہ اس قانون کے ساتھ مندرجہ بالا نوعیت کی وضاحت بھی ہوگی مگر انسان کی صدیوں کی دانش کہتی ہے کہ قانون اندھا ہوتا ہے۔
ہمارا المیہ یہ ہے کہ جس روز امریکی سینٹ میں متنازعہ شقوں کے ساتھ کیری لوگر بل منظور ہوا اس روز امریکہ میں متعین ہمارے سفیر حسین حقانی امریکی فیاضی پر ” صدقے واری“ ہورہے تھے۔ اس کے ساتھ ہی ” صدقے واری “ ہونے کا یہ سلسلہ پوری حکومت کی صفوں میں پھیل گیا۔
جب پاکستان کے اندر اس ” خوفناک“ بل کی بہت ساری شقوں میں چھپے مطالب پر غم و غصے کا طوفان اٹھا تو خدا خدا کرکے ” صدقے واری“ ہونے کا سلسلہ ذرا تھما۔
لیکن جیسے ہی مندرجہ بالا وضاحت سامنے آئی ہمارے وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی وہیں امریکی اکابرین کے سامنے امریکہ کی فیاضی پر صدقے واری ہونے لگے۔ انہوں نے وہاں جو بیان دیا اس کا مطلب کچھ یوں تھا۔
” ہم آپ کا یہ احسان کبھی نہیں بھولیں گے کہ آپ ہمیں گولی ہمیں مارنے کی نیت سے ہرگز نہیں ماریں گے۔۔۔“

Scroll To Top