تھامس کارلائل نے لکھا
“پیغمبر اسلام نے ساٹھ ایسے صحابی تیارکئے جن میں ہرایک یکتا تھا دنیا فتح کرنے کی صلا بیت رکھتا تھا۔
ایسا ہی ہے۔کتنے لوگ حضرت فیاض بن غنم کا نام جانتے ہیں یہ وہ جلیل القادر صحابی ہیں جنہوں نے حضرت عثمان غنی ؓ کے زمانے میں طرابلس(لیبیا)اور تونس کو فتح کیا۔۔۔
11اپریل2020
آپ ﷺ کی حیات مبارکہ کا آخری معرکہ تھا اسلام کا پہلا معرکہ رومن ایمپائر کی سپاہ کے خلاف معرکہ موتہ آپ نے جو لشکر بھیجا اس کی کمان حضرت زیدؓ کے پاس تھی۔ ہدایت تھی کہ وہ شہید ہو جائیں تو کمان حضرت جعفر بن ابی طالب سنبھال لیں وہ شہید ہوں تو کمان خالد ؓ لے لیں ایسا ہی ہوا۔۔۔
11اپریل2020
حضرت خالد بن ولید کا رجز قبول اسلام سے پہلے بھی یہ تھا اور بعد میں بھی رہا کہ”کوئی ماں پیدا نہیں ہوئی جو خالد کو زیر کرنے والے شہہ سوار کو جنم دے”حضرت عمر رضہ نے آپ ﷺسے شکایت کی کہ خالد کو روکیں اس کے رجز سے تکبر جھلکتا ہے. آپ ﷺ نے جواب دیا” وہ خالدبن ولیدہے اللہ کی تلوار ہے”۔۔۔
11اپریل2020
عظیم مورخ فلپ ہٹی لکھتا ہے۔۔۔” نہ سکندراعظم کو حوصلہ ہوا کہ صحرائے شام عبور کرے نہ ہنی بال کو نہ اٹیلا کو نہ کسی اور فاتح کو،خالد کو حکم ملا کہ فوری طور پر عراق کا محاذ چھوڑ کر شام کے محاذ پر پہنچو تو اس بے نظیر سپہ سالار نے کمال دلیری اورحیران کن منصوبہ بندی سے صحرائے شام عبور کیا۔۔۔
11اپریل2020

You might also like More from author