سو تو دھیان نہ کر اس پرجو منہ موڑے ہماری یاد سے۔۔اور کچھ نہ چاہے مگر دنیا کا جینا۔۔بس یہیں تک پہنچی ان کی سمجھ۔۔تحقیق کہ تمہارا رب ہی جانے اس کو جو بہکا اس کی راہ سے۔۔اوروہی خوب جانے اس کو جو راہ پر آیا۔۔۔(29،30 النجم)
09اپریل 2020
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
اور دنیا کی زندگانی تو یہی ہے مال دغا کا۔۔(20 الحدید)
09اپریل 2020
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
ذرا غور کیا سورہ رحمان کی ابتدائی آیات پر تو بہت بڑا انکشاف ہوا۔۔پہلی اور دوسری آیات یہ ہیں۔۔”شروع اللہ کے نام سے جو نہایت مہربان اوررحم والا ہے۔۔رحمان نے سکھلایاقرآن” ۔۔اس کے بعد تیسری آیت ہے۔۔”بنایا آدمی”۔۔اس کے بعد چوتھی آیت ہے۔۔” پھر سکھلایا اس کو بات کرنا”۔۔پہلے آیا قران پھر آدمی۔۔
09اپریل 2020
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
سبحان اللہ میرے رب تیرا قرآن پہلے اور باقی سب کچھ بعد میں تخلیق آدم سمیت
09اپریل 2020
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
آج غالب کے اس شعر کی بھی سمجھ آئی ہے
نہ تھا کچھ تو خدا تھا کچھ نہ ہوتا خدا ہوتا
ڈبویا مجھ کو ہونے نے نہ ہوتا میں تو کیا ہوتا
09اپریل 2020
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تو بار بار یاد دلاتا ہے ہمیں اپنے قرآن میں۔۔۔میں اللہ ہوں میں اللہ ہوں میں اللہ ہوں ۔۔۔بے شک تو ہی اللہ ہے جس کے سوا کوئی میرا معبود نہیں۔۔۔ہر دوسرا سجدہ مجھ پر حرام ہے حرام ہے حرام ہے۔۔۔
09اپریل 2020
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
اسے میرے آقا ﷺ کے رب ۔۔۔آج میرے وہ گناہ بھی معاف کر دے جو مجھ سے سرزد ہونے ہیں۔۔۔
09اپریل 2020
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
گناہ کرنا میری فطرت میں ہے۔۔۔اور معاف تو کرتا ہے کہ تو رب بھی ہے اور رحمان بھی۔۔۔
09اپریل 2020

You might also like More from author