پنجاب حکومت نے نواز شریف کی درخواست برائے معطلی سزا مسترد کر دی

تمام جزئیات، معروضی حالات اور میڈیکل رپورٹس کو مدنظر رکھتے ہوئے اتفاق رائے سے کافیصلہ کیاگےا،بارہا یاددہانی کے باوجود سابق وزیر اعظم کی مطلوبہ مےڈےکل رپورٹس فراہم نہےں کی گئیں

لاہور(اےن اےن آئی) وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار کی زیر صدارت وزیراعلیٰ آفس کے کمیٹی روم میں پنجاب کابینہ کا 26واں اجلاس منعقد ہوا، پنجاب کابےنہ نے متفقہ طورپر نوازشریف کی درخواست برائے توسیع معطلی سزا مسترد کردی، کابینہ کے اجلاس مےں تمام جزئیات، معروضی حالات اورنوازشریف کی میڈیکل رپورٹس کو مدنظر رکھتے ہوئے اتفاق رائے سے توسیع معطلی سزا کی درخواست کومسترد کرنے کا فیصلہ کیاگےا۔پنجاب کابےنہ کو برےفنگ مےںبتاےاگےا کہ میڈیکل بورڈاورخصوصی کمےٹی کی طرف سے بارہا یاددہانی کے باوجود  نوازشریف کی مطلوبہ مےڈےکل رپورٹس فراہم نہےں کی گئیں۔بریفنگ میں مزید بتایا گیاکہ وزیراعلیٰ عثمان بزدار کی ہدایت پر صوبائی وزراءراجہ بشارت اور ڈاکٹر یاسمین راشد کی سربراہی میں 11 فروری کو خصوصی کمیٹی تشکیل دی گئی۔19 ، 20 اور 21 فروری کو کمیٹی کے یکے بعد دیگرے تین اجلاس منعقد ہوئے۔21 فروری کو مسلم لیگ (ن) کے رہنما عطاءاللہ تارڑ خود اور ڈاکٹر عدنان سکائپ پر شریک ہوئے۔برےفنگ مےں کہا گےاکہ نواز شرےف کے نمائندوں نے نئی تصدےق شدہ مےڈےکل رپورٹس جمع کرانے کی بجائے پرانی مےڈےکل رپورٹس کو ہی حتمی قرار دےنے پر اصرار کےا۔خصوصی کمےٹی کی رپورٹ پنجاب کابینہ کے اجلاس میں پیش کی گئی اورپنجاب کابینہ نے نوازشریف کی درخواست برائے توسیع معطلی سزا کواتفاق رائے سے مسترد کردیا۔صوبائی کابےنہ کے اجلاس مےں پنجاب وائلڈ لائف (پروٹیکشن، پریزرویشن ، کنزرویشن اینڈ مینجمنٹ) ترمیمی ایکٹ 2007کے سیکشن 2(S) ، 21 اور 38 میں ترامیم کا فیصلہ کےاگےا۔صوبائی کابینہ نے پنجاب وائلڈ لائف (پروٹیکشن، پریزرویشن ، کنزرویشن اینڈ مینجمنٹ) ترمیمی ایکٹ 2007 میں ترمیم کی منظوری دے دی،جس کے تحت صوبے میں جنگلی حیات کے تحفظ کیلئے غیر قانونی شکار پر جرمانے اور سزاﺅں کی شرح میں اضافہ کیا جائے گا جبکہ اجلاس میں یہ فیصلہ بھی کیاگیاکہ یکم نومبر 2020 سے شروع ہونے والے ہنٹنگ سیزن سے قبل غیر قانونی شکار پر جرمانے اور سزائیں مزید بڑھائی جائیں گی۔اجلاس مےں صحرائے چولستان میں سرپلس کالے ہرن، چنکارا اور نیل گائے کے شکار کی اجازت دینے کا فیصلہ کےاگےا۔کابینہ نے 62 سرپلس کالے ہرن، 21 چنکارا اور 27 نیل گائے کے شکار کی اجازت دینے کے فیصلے کی منظوری دے دی۔ اجلاس میں دی پنجاب آکوپیشنل سیفٹی اینڈ ہیلتھ ترمیمی ایکٹ 2019 کی منظوری بھی دی گئی جبکہ پنجاب فشریز رولز 1965 میں ترمیم کی منظوری موخر کردی گئی۔وزےراعلیٰ عثمان بزدار نے کہا کہ جن ڈیمز سے پینے کا پانی فراہم کیا جا رہا ہے وہاں پر ماہی پروری کے باعث پانی آلودہ ہونے کی شکایات سامنے آئی ہیں لہذااس معاملے کا تفصیلی جائزہ لیا جائے اور محکمہ آبپاشی، صحت، پبلک ہیلتھ اور دیگر سٹیک ہولڈرز تمام جزئیات کا جائزہ لے کر اگلے کابینہ اجلاس میں حتمی سفارشات پیش کریں۔اجلاس مےں کرونا وائرس کے باعث ہمسایہ ملکوںمیں پیدا ہونے والی صورتحال کے پیش نظر صوبہ بھر میں ضروری حفاظتی تدابیر پر موثر انداز میں عملدرآمد کا فیصلہ کےا گےا۔وزےراعلیٰ نے ہداےت کی کہ متعلقہ ادارے ہمہ وقت چوکس رہیں اور صورتحال پر کڑی نظر رکھی جائے۔اجلاس میں بتایا گیا کہ محکمہ صحت کامزےد سٹاف اےئرپورٹس پر تعےنات کیا جائے گا۔ وزےراعلیٰ عثمان بزدار نے کہا کہ ہمسایہ ممالک خصوصاً چین اورایران سے درآمد ہونے والی کھانے پینے والی اشیاءکی قلت کسی صورت نہیں ہونی چاہیئے۔انہوںنے ہدایت کی کہ صوبائی وزیر صنعت میاں اسلم اقبال اس ضمن میں میٹنگ کرکے امور کا جائزہ لیں اور پیشگی اقدامات اٹھائیں۔وزےراعلیٰ عثمان بزدار نے کہا کہ پنجاب حکومت نے ڈیڑھ برس کے دوران عوام کی خدمت کیلئے بے مثال اقدامات کئے ہیں اور ہر فیصلہ مشاورت کے ساتھ کیا گیا ہے اور کیا جائے گا۔صوبے میں ون مین شو کے غلط کلچر کو اکھاڑ پھینکا ہے۔مشاورت سے کئے گئے فیصلوں کے مثبت نتائج سامنے آتے ہیں۔عوام کو ریلیف کی فراہمی کیلئے آخری حد تک جائیں گے۔حکومت کے بر وقت اقدامات اور بہترین فیصلوں سے مہنگائی میں کمی ہوئی ہے۔ پرائس کنٹرول کیلئے سیاسی و انتظامی ٹیم پہلے سے زیادہ جانفشانی سے فرائض سرانجام دے۔عوام کو کسی صورت تنہا نہیں چھوڑ سکتے۔مافیا جہاں بھی موجود ہے، اسے کچلنا ضروری ہے۔اجلاس میں پنجاب کابینہ کے 24 ویں اجلاس کے منٹس کی توثیق کی گئی۔صوبائی وزرائ، مشیران، معاونین خصوصی، چیف سیکرٹری اور متعلقہ محکموں کے سیکرٹریز نے اجلاس میں شرکت کی۔

You might also like More from author