مانچسٹر؛ اسپاٹ فکسنگ پر ناصر جمشید کو 17 ماہ قید، عدالت سے گرفتار

ناصر جمشید، یوسف انور اور اعجاز احمد کو کمرہ عدالت سے گرفتار کرکے جیل بھیج دیا گیا ۔ فوٹو : فائل

مانچسٹر: پی ایس ایل اسپاٹ فکسنگ کیس میں ملوث پاکستانی اوپنر ناصر جمشید اور ان کے ساتھیوں یوسف انور اور محمد اعجاز کو سزا سنادی گئی جس کے بعد انہیں کمرہ عدالت سے گرفتار کرلیا گیا۔

پاکستان سپر لیگ کے دوسرے ایڈیشن کے آغاز میں سامنے آنے والے اسپاٹ فکسنگ کیس میں شرجیل خان، خالد لطیف، شاہ زیب حسن اور محمد عرفان ملوث پائے گئے تھے، ناصر جمشید پر سہولت کاری کا الزام تھا، اوپنر کو برطانوی نیشنل کرائم ایجنسی نے اسی کیس میں گرفتار کرنے کے بعد ضمانت پر رہا کردیا تھا۔

پی سی سی بی اینٹی کرپشن ٹربیونل نے اپنی کارروائی میں تمام کرکٹرز کو مختلف سزائیں سنانے کے ساتھ ناصر جمشید پر 10سال کیلیے پابندی عائد کردی تھی۔

رطانیہ کے مانچسٹر کورٹ میں کیس کی سماعت جاری تھی جس میں ناصر جمشید اور ان کے دو ساتھیوں یوسف انور اور محمد اعجاز نے اپنے جرم کا اعتراف کرلیا تھا اور آج برطانوی عدالت نے ناصر جمشید کو 17 ماہ جب کہ ان کے ساتھیوں یوسف انور کو ساڑھے 3 سال اور محمد اعجاز کو ڈھائی سال قید کی سزا سنادی جس کے بعد تینوں ملزمان کو کمرہ عدالت سے گرفتار کرکے جیل بھیج دیا گیا ہے۔

You might also like More from author