ٹوئیٹر کالم برائے غلام اکبر

میں میاں صاحب کے دو جملے کئی دہائیاں گذر جانے کے باوجود نہیں بھول سکا۔
(۱) میں نے کبھی ایسے شخص پر بھروسہ نہیں کیا جسے میں نے خریدا نہ ہو(اس بات کی تصدیق عرفان صدیقی کریں گے)
(۲) جج اور جنرل کروڑدوکروڑکی مار ہوتے ہیں۔ میاں کا المیہ یہ رہا کہ وہ جج تو خرید لیتے تھے جنرل نہ خرید سکے۔
30-11-2019
میرے لئے یہ دکھ کی بات ہے کہ قمر زمان کائرہ جیسے لوگ بھی مافیاو¿ں کے ترجمان بن گئے ہیں اب مریم اورنگزیب اور قمر زماں کائرہ میں کوئی فرق باقی نہیں رہا۔
30-11-2019
قوم کی اولین ترجیح اس وقت یہ ہے کہ وہ طاقتور اور امیر و کبیر خاندان جو ایک تہائی صدی تک براہ راست یا بالواسطہ طور پر ملک کی تقدیر پر قابض رہے ہیں اور ججوں ،قلمکاروں، بیروکریٹس کی وفاداریں خرید کر اپنی طاقت میں بے پناہ اضافہ کرتے رہے ہیں ان سے ہمیشہ ہمیشہ کے لئے جان چھڑا لی جائے۔
30-11-2019

You might also like More from author