میری محافظ میری وردی ہے

 

انسان کے لیے اسکی جان سے بڑھ کر کوئی چیز نہیں ہوتی اور ہمارے سپاہی اس قوم کے مستقبل کے لئے اپنی جان کی قربانی دینے سے دریغ نہیں کرتے۔پاکستانی قوم کبھی بھی ان قربانیوں کو فراموش نہیں کرسکتی جو پاکستانی فوج نے اس ملک و قوم کی خاطر دی ہیں۔ ہماری فوج اپنی جان کی پرواہ کیے بغیر ہماری حفاظت کے لیے محاذوں پر کھڑی ہے۔

وزیراعظم عمران خان کے  حالیہ کامیاب  دورہ امریکہ  اس خطے کے امن کے دشمنوں کے دلوں میں بری طرح کھٹک رہا ہے۔  خاص طور پر ہمارا ہمسائیہ ملک افغان امن عمل کو سبوتاژ کرنے کے درپے ہے۔ صدر ٹرمپ کا مسئلہ کشمیر کو ایشو تسلیم کرنا اور اس کے لئے ثلاثی کی پیشکش نے بھارتی ایوانوں میں کھبلی مچا دی ہے۔  تو دوسری جانب  کلبھوشن یادیو کے معاملے پر بھارت کو عالمی عدالت میں منہ کی کھانی پڑی ہے۔

خیال رہے کہ ہماری کمزور حکومتی خارجہ پالیسیوں  کے نتیجے میں ماضی میں بھارت کا افغانستان اثرو رسوخ کافی حد تک بڑھ چکا تھا۔ افغان سرحد پر کئی بھارتی سفارت خانے قائم ہو چکے تھے۔ جب کہ بھارتی ایجنسیز افغان فوجی کو تربیت بھی دے رہی تھیں۔ اسلئے بھارت امریکی فورسز کے انخلا کے بعد افغانستان میں کسی بڑے کردار کے ملنے کے خواب سجائے بیٹھا تھا۔ جو کہ وزیراعظم عمران خان کے حالیہ دورہ کے بعد چکنا چور ہوتے نظر آرہے ہیں۔ بھارتی در اندازی کا سب سے بڑا ثبوت کلبھوشن یادیو کی شکل میں پوری دنیا میں عیاں ہو چکا ہے۔  بھارتی لابی کے ساتھ ساتھ کئی دوسری امن دشمن طاقتیں افغان مذکراتی عمل کو سبوتاژ کرنے کے درپے ہیں۔

پاکستان کی خطے میں امن کی کوشش کے جواب میں گزشتہ روز بزدل دہشت گردوں نے ایک مرتبہ پھر چھپ کر سیکیورٹی فورسز پر وار کیا۔  شمالی وزیرستان میں سرحد پار سے دہشتگردوں کی فائرنگ کے نتیجے میں پاک فوج کے 6 جوان شہید ہوگئے۔آئی ایس پی آر کے مطابق پاک افغان سرحد پر شمالی وزیرستان کے علاقے گرباز کے قریب دہشت گردوں نے سرحد پار سے پاک فوج کی بارڈر پیٹرولنگ پارٹی پر فائرنگ کردی۔ جس کے نتیجے میں پاک فوج کے 6 جوان شہید ہوگئے۔ترجمان پاک فوج میجر جنرل آصف غفور نے پاک افغان سرحد پر6 اور بلوچستان میں 4 جوانوں کی شہادت پر کہا ہے کہ پاکستان خطے کے امن کےلیے قربانیاں دے رہا ہے، قبائلی علاقوں کی سیکیورٹی صورتحال بہتر ہورہی ہے۔

شمالی وزیرستان اور بلوچستان کے ضلع تربت میں پاک فوج کے 10 جوانوں کی شہادت پر سیاسی رہنماؤں نے شدید الفاظ میں مذمت اور شہدا کے لواحقین سے اظہار تعزیت کیا ہے۔ وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے جوانوں کی شہادت پر کہا ہے کہ دہشت گردوں کے خلاف لڑتے ہوئے شہید ہونے والے جوانوں کو قوم خراجِ عقیدت پیش کررہی ہے، ان بزدلانہ کارروائیوں سے ہمارے حوصلے پست نہیں ہوں گے۔

 

وطن عزیز گذشتہ کئی دہائیوں سے دہشت گردی جیسے ناسور کی لپیٹ میں آنے کی وجہ سے نہ صرف اندرونی طور پر کمزور ہوا بلکہ بین الاقوامی سطح خصوصا خطے میں پاکستان دشمن ملک بھارت کی ناپاک سازشوں کا بھی مقابلہ کرتا آرہا ہے ملک میں امن کے قیام اور اسے دہشت گردی سے پاک ملک بنانے کے لیے ہمیشہ پاک فوج نے اہم کردار ادا کیا ،حکمرانوں کی غلط خارجہ اور داخلہ پالیسیوں کی بدولت فوج کو دہشت گردی کے خلاف جنگ میں بہت سی مشکلات اور رکاوٹوں کا بھی سامنا کرنا پڑا لیکن پاک فوج کے ہزاروں جوانوں نے اپنی جانوں کے نذرانے پیش کرکے ان تمام تر مشکلات کے باوجود ثابت قدمی اور قومی جذبے سے وطن عزیز کی حفاظت میں جو لازوال قربانیاں دیں  جن کی بدولت آج ملک میں بہت حد تک امن قائم ہوا۔  موجودہ  آرمی چیف قمر جاوید باجوہ نے ہ نئے عزم اور ولولے کے ساتھ دوبارہ سر اٹھانے والے فسادیوں کی سرکوبی کے لیے ردالفساد کے نام سے جہاد شروع کیا تو دہشت گردوں کو چن چن کر نشانہ بنایا گیا ، ان کے بچے کھچے ٹھکانے تباہ برباد کردیئے گئے اور ان کے سہولت کاروں کے گرد بھی شکنجہ سخت کردیا گیا ، ایسے نا مساعدہ حالات میں فسادیوں کی اکثریت موت کے گھاٹ اتار دی گئی یا ملک سے راہ فرار اختیار کرگئی،راہ فرار اختیار کرنے والی اکثریت نے پڑوسی ملک سے سازشوں کا سلسلہ شروع کردیا تو افواج پاکستان نے ان کو وہ سبق سکھایا کہ ان کے مدد گار اب امن اور دوستی کی زبان بولنے پر مجبور نظر آتے ہیں کیونکہ پاک فوج نے ہمسایہ ملک میں ان کے ٹھکانوں کو نیست و نابود کردیا ہے ،قبائلی اضلاع میں پر امن انتخابات کا انعقاد دہشتگردی کے خلاف امن کی فتح ہے۔ امن کی یہ جیت نئے پاکستان میں استحکام پاکستان کی جانب اہم پیشرفت ہے۔  ملکی تاریخ میں پہلی بار تبدیلی کے عمل نے قبائلی علاقوں کے سنگلاخ پہاڑوں پر جمہوریت کے خوبصورت پودے کی نمو ممکن کی۔ یہ استحکام افواج پاکستان کے ذریعےہی ممکن ہو سکا ہے۔قبائلی علاقوں میں غیرملکی فنڈنگ سے پلنے والے شرپسند عناصر نے باقاعدہ منظم طریقے ریاست و افواج پاکستان کے خلاف زہر افشانی کا سلسلہ شروع کر دیا تھا۔  ہر گزرتے دن ان کی دشنام طرازی میں اضافہ ہوتا گیا اور پھر کھلے عام ہندوستان اور اسرائیل کی افواج سے مدد مانگنے لگے۔ افواج پاکستان کو قتل کی دھمکیاں دی گئیں۔ سلام ہے وطن کے محافظوں پر جنہوں نے یہ سب کچھ صبر سے برداشت کیا۔

جب وطن عزیز کی معاشی ترقی کا ضامن منصوبہ سی پیک کا اعلان ہوا تو مسلح افواج نے اس کی حفاظت کی ذمہ داری اور ضمانت کا بیڑا اٹھالیااور پچھلے چند سال سے یہ منصوبہ فوج کی نگرانی میں تکمیل کے مراحل طے کررہا ہے اس سلسلے میں آنے والی اندرونی اور بیرونی مشکلات کو پاک فوج دور کرنے میں برسر پیکار نظر آتی ہے، پاک فوج جہاں ملک کی سرحدو ں کی حفاظت کرتی ہے وہیں اندرونی سازشوں اور خطرات سے بھی نبردآزماہوتی ہے ، مشرقی اور مغربی محاذ پر دشمن کی توپوں کو خاموش کروانا تو معمول ہی بن گیا ہے ، اسی طرح بارشوں اور سیلابوں کی تباہ کاریاں بھی پاک فوج کی مدد کے بغیر قابو بھی ناممکن ہے ، الغرض وطن عزیز کی ہمہ جہت ترقی اور حفاظت کے لئے پاک آرمی نے ناقابل فراموش کردار ادا کررہی ہے جسے کوئی نظرانداز نہیں کرسکتا ۔

اس زمیں کی مٹی میں خون ہے شہیدوں کا
ارضِ پاک مرکز ہے قوم کی امیدوں کا

 

You might also like More from author