قصور سانحہ: تیسرے روزبھی پوری قوم سراپا احتجاج، مظاہرے

  • 7 سالہ زینب کابہیمانہ قتل ،سیاسی و سماجی جماعتوں کا اسلام آبادمیں احتجاج‘ مجرموں کی فوری گرفتاری اور سخت سزا کا مطالبہ
  • انسانیت سوز واقعہ کےخلاف سانگھڑ کے شہری سراپا احتجاج،ساہےوال گورنمنٹ کالج کے سےنکڑوں طلباءکی احتجاجی رےلی
کراچی‘ سانحہ قصور کےخلاف ایک بچی احتجاج کر رہی ہے

کراچی‘ سانحہ قصور کےخلاف ایک بچی احتجاج کر رہی ہے

اسلام آباد( این این آئی)سات سالہ زینب کو بے مبینہ طور پر اغور کرکے زیادتی کے بعد قتل کرنے کے خلاف جمعہ کو نیشنل پریس کلب کے باہر مختلف سیاسی جماعتوں نے احتجاج کیا۔ احتجاج میں شریک شرکاءنے پلے کارڈز اٹھا رکھے تھے جن پر زینب کی حق میں اور قاتلوں کے خلاف نعرے درج  تھے۔ مظاہرین نے ظالمو جواب دو، خون کا حساب دو، پنجاب حکومت مردہ باد، انصاف دو انصاف دو، زینب کو انصاف دوکے نعرے لگائے۔ پی ٹی آئی خواتین ونگ کی جانب سے منعقدہ احتجاجی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے رکن قومی اسمبلی نفیسہ خٹک کا کہنا تھاقانون نافذ کرنے والے ادارے عوام کی جان و مال کے تحفظ مین ناکامی ہو چکی ہے،عدالتیں زینب کو انصاف دلائیں۔غیر مسلم ممالک میں بھی ایسے واقعات نہیں ہوتے۔ ماﺅں کو دنیا داری کے ساتھ ساتھ بچوں کی اخلاقی تربیت کا بھی خیال رکھناچاہیے۔ انہوں نے شہباز شریف اورصوبائی حکومت پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ وزیراعلیٰ کی کوڈ گورننس کے دعوﺅں کا پول کھل گیا ہے، شہباز شریف اور رانا ثناءاللہ زینب کی قتل کا ذمہ دار ہیں کیونکہ اس سے پہلے بھی قصور میں اس طرح کے افسوناک واقعہ پیش آچکا ہے۔وزیرا علیٰ اور وزیر قانون نے عہدے پر رہنے کااختلاقی جواز کھو دیا ہے ان کو فوری طور پراستعفیٰ دینا چاہیے۔ حکومت عوامی کی جان و مال کی تحفظ میں مکمل ناکام ہو چکی ہے ۔ عوام آئندہ ان ظالم حکمرانوں کو اپنے ووٹ کے ذریعے مسترد کردے۔پی ٹی آئی کے رہنمافیصل جاوید نے کہا کہ پی ٹی آئی اور سول سوسائٹی کے افراد اس وقت تک آواز بلند کرتی رہے گی جب تک قاتلوں کو سرعام پھانسی نہیں دی جاتی۔ جبکہ صور میں پیش آنے والے واقعہ کے خلاف سانگھڑ کے شہری سراپا احتجاج، سانگھڑ کے سیاسی سماجی،انسانی حقوق تنظیم ، اساتذہ وطلباءنے قصور میں بےدردی سے قتل ہونے والی 7 سالا کمسن بچی زینب کے حق میںپریس کلب سانگھڑ کے سامنے ریلی نکالی ، انہوں نے مطالبہ کیا کہ معصوم زینب کے قاتل کو سرعام پھانسی دی جائے تاکے کوئی اور زینب جیسی کلی کسی حیوان کی حوس کی بھیٹ نہ چڑھ جائے۔صحبت پور کے سیاسی وسماجی رہنما اسلم کھوسہ سربراہی میں سانحہ قصور کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کیا گیا۔تفصیلات کے مطابق صحبت پور میں سیاسی وسماجی رہنما میر محمد اسلم کھوسہ کی سربراہی میں سانحہ قصور میں 7سالہ معصوم بچی زینب کے بہیمانہ قتل کے خلاف صحبت پور مین چوک پراحتجاجی مظاہرہ کیا گیا۔مظاہرے میں لوگوں نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔مظاہرہ کے شرکاءکے ہاتھوں میںمعصوم زینب کی تصاویر اور پلے کارڈ تھے جن پر حکومت پنجاب کے خلاف نعرے درج تھے۔مظاہرہ کے شرکاءسے سماجی رہنما محمد اسلم کھوسہ نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پنجاب کے علاقے قصور میں 7سالہ معصوم بچی زینب کے اغوا اور زیادتی کے بعد بہیمانہ قتل کرنا انتہائی افسوس ناک اور ناقابل برداشت واقعہ ہے۔جس کی جتنی مزمت کی جائے کم ہے۔انھوں نے حکومت پنجاب سے مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ سانحہ قصور میں ملوث عناصر کو جلد از جلد گرفتار کر کے کڑی سے کڑی عبرت ناک سزا دی جائے تاکہ پھر کبھی کسی اور زینب جیسی معصوم بچی کے ساتھ ایسا واقعہ رونما نہ ہو۔گورنمنٹ کالج ساہےوال کے سےنکڑوں طلبا نے آج سانحہ قصور کے خلاف طالب علم لےڈر رانا وسےم کی قےادت مےں اےک احتجاجی رےلی اور جلوس نکالا جو شہر کے مختلف بازاروں فرےد ٹاﺅن روڈ،ڈی سی روڈ، ،جناح سٹرےٹ،صدر چوک،جو گی چوک ،پاکپتن چوک،عارف روڈ چوک سے ہوتا ہوا ساہےوال پرےس کلب پہنچا جہاں طلبا نے مظاہرہ کےا اور حکومت کے خلاف نعرے لگا ئے زےنب ہم شر مندہ ہےں ،تےرے قاتل زندہ ہےں ،شہباز شرےف استعفیٰ دو ،آئی جی،اےس پی کو گرفتار کرو ۔مظاہرےن قصور پر فائرنگ کر نے کی سخت سزا دی جائے زےنب کے قاتلوں کو فوری گرفتار کر لےا جائے بعد ازاں طلبا پر امن طور پر منتشر ہو گئے۔

Scroll To Top