عمران خان کا طاہر القادری کے ساتھ سڑکوں پر نکلنے کا اعلان

  • چیف جسٹس سانحہ ماڈل ٹاون کا ازخود نوٹس لیں، اداروں پر اعتماد ختم نہ ہو تو لوگ سڑکوں پرہوتےہیں‘ چیئرمین تحریک انصاف
  • زینب کے والد کو پولیس سے انصاف کی توقع نہیں‘آرمی چیف اور چیف جسٹس سے انصاف کا مطالبہ کر رہے ہیں‘
اسلام آباد: عمران خان پریس کانفرنس کر رہے ہیں

اسلام آباد: عمران خان پریس کانفرنس کر رہے ہیں

اسلام آباد(صباح نیوز)چیئرمین تحریک انصاف عمران خان نے کہا ہے کہ ڈاکٹر طاہرالقادری 17 تاریخ کو سانحہ ماڈل کے حوالے سے احتجاجی تحریک کے لئے نکل رہے ہیں اور 18 جنوری کو پوری قوت کے ساتھ پاکستان عوامی تحریک کے ساتھ نکلیں گے۔اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ لوگوں کا اعتماد حکومت اور پولیس پر ختم ہوگیا، جب اداروں پر اعتماد ختم ہوجاتا ہے تو لوگ سڑکوں پر توڑ پھوڑ کرتے ہیں۔عمران خان نے کہا کہ 7 سالہ بچی زینب کے والد بھی انصاف پنجاب حکومت یا پولیس سے نہیں مانگ رہے بلکہ آرمی چیف اور چیف جسٹس سے انصاف کا مطالبہ کر رہے ہیں، جس پولیس کا کام لوگوں کی حفاظت ہے اور ایک خاندان کی حفاظت کر رہی ہے۔ سانحہ ماڈل ٹاون اور قصور واقعے کے بعد عوام کا اعتماد پنجاب پولیس سے اٹھ چکا ہے۔چیئرمین تحریک انصاف نے کہا کہ شریف برادران کو 19 سال پنجاب میں حکومت کرتے ہوگئے، آج پولیس کا حال دیکھیں، ہم پولیس میں اصلاحات کر رہے ہیں اور انہوں نے پولیس کی وردیاں بدل دیں، کیا کپڑے بدلنے سے کارکردگی بہتر ہوگی۔عمران خان نے کہا کہ ماڈل ٹاون کے متاثرین آج بھی انصاف کے لئے سڑکوں پر ہیں، ہمارے کارکن حق نواز کو گولیاں مار کر قتل کیا گیا کسی نے کچھ نہیں کیا اور قصور میں بھی پولیس نے مظاہرین پر سیدھی فائرنگ کی، کونسی پیشہ ور پولیس اس طرح سے کرتی ہے۔چیئرمین تحریک انصاف کا کہنا تھا کہ ساری پولیس میں بھرتیاں رائے ونڈ سے ہوتی ہیں، پنجاب پولیس ایسی نہیں انھوں نے خود پولیس کو خراب کیا، آج لوگ خیبرپختونخوا پولیس کی تعریف کرتے ہیں۔عمران خان نے مزید کہا کہ مہذب معاشرے میں ایسے اقدامات کیے جاتے ہیں کہ مستقبل میں ایسا نہ ہو، دیگر ملکوں میں بھی ایسے جرائم ہوتے ہیں لیکن مجرم پکڑے جاتے ہیں،عمران خان کا کہنا تھا کہ قصور سانحے پر پوری قوم کو تکلیف میں دیکھا ہے اور جب ماں باپ نے اپنی بچی کی تصویر دیکھی ہوگی تو ان پر کیا گزری ہوگی، بدقسمتی سے ہمارے ملک میں بچیوں کے تحفظ کا کوئی قانون ہی موجود نہیں۔ جب سانحہ ماڈل ٹان اور قصور کی طرح کے واقعات و سانحات رونما ہوجاتے ہیں تو شہبازشریف ڈرامے بازی کرتے ہوئے لوگوں کو معطل کردیتے ہیں۔ اب عوام کا اعتماد پولیس اور گورنمنٹ سے اٹھ چکا ہے کیوں کہ لوگوں کو انصاف نہیں مل رہا اور جب عوام کو انصاف نہ ملے تو پھر وہ تشدد کر راستہ اختیار کرلیتے ہیں جس کی ذمہ داری ریاست پر عائد ہوتی ہے۔ چیئرمین پی ٹی آئی نے کہا کہ طاہرالقادری موجودہ نظام کے خلاف 17 جنوری کو ملک گیر تحریک شروع کررہے ہیں ہم ان کے ساتھ کھڑے ہوں گے، چیف جسٹس سے بھی اپیل کرتا ہوں کہ سانحہ ماڈل ٹاون کا ازخود نوٹس لیں جب کہ رائل فیملی کی سیکیورٹی پر سالانہ 7 ارب روپے کے اخراجات کا بھی نوٹس لیا جائے

Scroll To Top