اب ہم تباہی کو گلے نہیں لگائیں گے

aaj-ki-bat-logo
جب بھی یہ دن آتا ہے اندرسے درد کی چیخیں بلند ہوتی ہیں۔۔۔ اس دن 1947ءمیں قائم ہونے والا پاکستان ” دولخت“ ہوگیا۔۔۔
مجھے یاد ہے کہ 16دسمبر1971ءکو میرا وجود چیخ بھی نہیں سکا تھا۔۔۔ ایک سناٹا سا تھا جو پورے وجود پرچھا گیا تھا۔۔۔ یہ قوم اپنی کھیتی کا پھل کاٹ چکی تھی۔۔۔
میں جانتا ہوں کہ چیخوں سے زندگی کا سفر طے نہیں ہوتا۔۔۔ زندگی چلتی رہتی ہے۔۔۔ ہمیں صبر آجاتا ہے ہم بھول جاتے ہیں کہ ” گیارہویں صدی میں ہم نے بیت المقدس کیسے کھویا ؟“ ۔۔۔1258میں بغداد کیوں لاکھو ں مسلمانوں کے خون سے نہلا دیا گیا۔۔۔؟
سپین پر ہلال کی حکمرانی کیسے قصہ ءپارینہ بنی ؟ پلاسی میں سراج الدولہ کو شکست کا سامنا کیوں کرنا پڑا ؟ میسور کا سقوط کیسے ہوا ؟
مگر جو بھول نہیں پاتے۔۔۔ وہ اگر نہ بھی چیخیں تو بھی درد کی لہریں ان کے وجود میں ضرور دوڑتی ہیں۔۔۔
آج پاکستان جہاں کھڑا ہے وہ مقام تقریباً وہی ہے جس مقام پر ہم 46برس قبل کھڑے تھے۔۔۔ تب بھی پاکستان اپنے عیار اور خونخوار دشمن کے نشانے پر تھا ۔۔۔ آج بھی پاکستان اسی عیار اور خونخوار دشمن کے نشانے پر ہے۔۔۔ تب ہم نہیں جانتے تھے کہ عام انتخابات میں سب سے زیادہ نشستیں حاصل کرنے والی پارٹی کا لیڈر تقریباً سترہ برس قبل اپنی خدمات نئی دہلی کو پیش کرچکا تھا۔۔۔ آج شاید ہم جان چکے ہیں کہ ہمارا کون کون سا لیڈر نئی دہلی کے ایجنڈے کو آگے بڑھا رہا ہے۔۔۔
تب بحث یہ چھڑی تھی کہ سقوطِ ڈھاکہ کا بڑا مجرم کون ہے ؟ جنرل یحییٰ خان یا زیڈ اے بھٹو؟ وطنِ عزیز میں سوچ کی یہ لہر بڑی تیزی سے ابھری اور پھیلی تھی کہ اگر شیخ مجیب الرحمان کو ملک کا اگلا وزیراعظم مان لیا جاتا تو 16دسمبر1971ءکو رونما ہونے والے المیے کو روکا جاسکتا تھا۔۔۔ حقیقت اس کے برعکس یہ تھی کہ شیخ مجیب الرحمان محض ایک مہرہ تھا جسے نئی دہلی نے بڑی کامیابی کے ساتھ استعمال کیا ۔۔۔ اگر تلہ سازش کیس کو اپنے منطقی انجام تک پہنچایا جاتا اور اقتدار کے طلب گار فیلڈ مارشل ایوب خان کو ہٹانے کی جلدی میں نہ ہوتے تو 7دسمبر1970 ءکو ہونے والے عام انتخابات سقوطِ ڈھاکہ کا پیش خیمہ نہ بنتے ۔۔۔
بہرحال تاریخ تبدیل نہیں کی جاسکتی ۔۔۔ آج ہماری خوش قسمتی یہ ہے کہ ہماری فوج اور اس کی قیادت دشمن کے ایجنڈے کو سمجھ رہی ہے۔۔۔ اور اس کے پاس ہر سازش کو ناکام بنانے کا طریقہ کار موجود ہے۔۔۔جمہوریت کے تسلسل کے ساتھ فوج کی وابستگی خوش آئند ہے۔۔۔ مگر کون سی جمہوریت ؟
اس سوال کا جواب تلاش کرنا آج ہمارا سب سے بڑا چیلنج ہے۔۔۔
اب ہم تباہی کو گلے نہیں لگائیں گے ۔۔۔

Scroll To Top