اللہ ہمارا معبود ہے محمد ﷺ ہمارے لیڈر ہیں ا ور قرآن ہمارا آئین ہے

aaj-ki-bat-logo


کی محمد ﷺ سے وفا تُو نے تو ہم تیرے ہیں

یہ جہاں چیز ہے کیا لوح و قلم تیرے ہیں

علامہ اقبال (رحمتہ اللہ علیہ) کے اِ س ایک شعر میں اسلام کی پوری روح رچی بسی ہے۔
مغرب کے مشہور مورخ گبن نے لکھا تھا۔
” مسلمانوں کے عروج کی سب سے بڑی وجہ جو میری سمجھ میں آتی ہے وہ ہے مسلمانوں کے خون میں رچی بسی (حضرت) محمد( ﷺ) سے وہ بے پایاں اور مجنونانہ عقیدت جس نے انہیں اپنے عقائد اور اپنے دین کے لئے کٹ مرنے کا عزم وحوصلہ دیا۔“
چنانچہ اسلام کے دشمنوں کے ایجنڈے میں سرفہرست ہمیشہ یہ مقصد رہا ہے کہ آنحضرت ﷺ کی ذات مبارکہ کے ساتھ مسلمانوں کا ” آقا وغلام “ کا جو رشتہ صدیوں سے چلا آرہا ہے وہ کسی طرح کمزور پڑ جائے اور ٹوٹ جائے۔
مسلمانوں کی بد نصیبی یہ ہے کہ وہ اپنے آقا کی تعلیمات سے ” عمل کا رشتہ“ توڑ چکے ہیں ۔
اور مسلمانوں کی خوش نصیبی یہ ہے کہ وہ اپنے آقا کی ناموس اور حرمت پر اپنی جان نچھاور کرنے کے لئے آج بھی تیار رہتے ہیں ۔
جو لوگ دین اور سیاست ۔۔ یا د ین اور ریاست کو الگ الگ رکھنے کی بات کرتے ہیں وہ بھول جاتے ہیں کہ آنحضرت ﷺ کی ذات مبارکہ میں ” دین سیاست اور ریاست“ تینوں یک جا ہوگئے تھے۔
آپ پےغمبر آخر الزماں ہونے کے ساتھ ساتھ دنیا کے عظیم ترین جنرل عظیم ترین سیاست داں اور عظیم ترین ریاست ساز بھی تھے۔
جو لوگ پاکستان کو دورِ حاضر کا مدینہ بنانے کا خواب دیکھ رہے ہیں ، وہی آنحضرت کے سچے پیروکار اور عاشقان ہیں ،
اللہ ہمارا معبود ہے
محمد ﷺ ہمارے لیڈر ہیں
ا ور قرآن ہمارا آئین ہے

Scroll To Top