بہت سارے وزرائے اعظم کو رخصت ہوتے دیکھا ،جتنا رسوا شریف خاندان ہوا کوئی نہیں ہوا، طاہر القادری

  • بددیانت شخص پوچھتا ہے کہ مجھے کیوں نکالا؟، جیل کی کال کوٹھڑی اسکا ٹھکانہ ہے،سربراہ پاکستان عوامی تحریک

طاہرالقادری

لاہور(اےن اےن آئی) پاکستان عوامی تحریک کے سربراہ ڈاکٹر محمد طاہر القادری نے کہا ہے کہ جسٹس باقر نجفی کمشن کی رپورٹ کے جائزہ لیتے وقت اگر حکومتی وکلاءمعزز ججز کے چیمبر میں بیٹھیں تو شہدائے ماڈل ٹاﺅن کے ورثاءکو بھی بٹھایا جائے،اللہ پر توکل کے باعث سمجھتا ہوں سانحہ ماڈل ٹاﺅن کے ملزم کیفر کردار کو پہنچیں گے ،اپنی زندگی میں بہت سارے وزرائے اعظم کو بر طرف ہوتے اور اقتدار سے جاتے دیکھا مگر جتنا رسوا شریف خاندان ہوا کوئی نہیں ہوا ۔ اپنے اےک بےان مےں انہوںنے کہاکہ ڈھٹائی کی انتہا ہے کہ بددیانت شخص پوچھتا ہے کہ مجھے کیوں نکالا؟۔میرا یقین ہے شریف خاندان کا اللہ کی طرف سے مواخذہ ہو رہا ہے ،آگے بہت کچھ ہو گا ،اسی ہفتے پاکستان آ رہا ہوں۔جیل کا کالا کمرہ انکا ٹھکانہ ہے ،انہوں نے انسانیت کے ساتھ جو ظلم کئے ایک ایک کا بدلہ دیں گے۔اتنا کچھ ہونے کے باوجود یہ اپنی بے عزتی محسوس نہیں کر سکے یہ بھی قدرت کی گرفت ہے ۔بے عزتی کے محسوس ہونے یا نہ ہونے کا تعلق ضمیر سے ہے ۔جب معیار پیسہ بن جائے تو ضمیر بھی مر جاتا ہے۔احساس انہیں ہوتا ہے جن کے اندرلطافت ہو جن کے اندر صرف غلاظت رہ جائے وہ احساس سے عاری ہو جاتے ہیں۔جو شخص ریاست کےلئے سودا کرے ،ایمان بیچ دے اسکا ضمیر مردہ ہو جاتا ہے اسے بے عزتی سے کیا لینا دینا۔ ڈاکٹر طاہر القادری نے کہا کہ لوگ کہتے ہیں انکا اقتدار بڑا طویل تھا یزید نے 60ہجری میں اہل بیت پر ظلم ڈھائے مگر اللہ نے اسکا بدلہ 132ہجری میں جا کر لیا ،تاخیر جرم کی سزا کو بڑھا تی ہے ۔اشرافیہ عبرت ناک ا نجام سے دوچار ہو گی۔دریں اثناءسربراہ عوامی تحریک نے پی ٹی آئی کے رہنما صمصام بخاری کی والدہ کے انتقال پر دلی تعزیت کا اظہار کیا اور مرحومہ کے درجات کی بلندی کےلئے دعا کی۔

Scroll To Top