موجودہ حکمران اسلامی اور خوشحال پاکستان نہیں دے سکتے، سراج الحق

  • ملک میں روزانہ بارہ ارب روپے کی کرپشن ہورہی ہے، دفاع کے بعد سب سے زیادہ بجٹ تعلیم کیلئے مختص کیا جائے
  • دنیا چاند پر پہنچ چکی ،ہمارے بچے گندگی کے ڈھیروں میں رزق تلاش کررہے ہیں‘امیر جماعت اسلامی

سراج الحق

پشاور(این این آئی)امےر جماعت اسلامی سےنٹر سراج الحق نے مطالبہ کیا ہے کہ دفاع کے بعد سب سے زیادہ بجٹ تعلیم کیلئے مختص کی جائے ،دنیا چاند پر پہنچ چکی ہے اور ہمارے بچے گندگی کے ڈھیروں میں رزق تلاش کررہے ہیں ،موقع ملا تو ملک کو ایجوکیشن فری سٹیٹ بناکر پرامن اور خوشحال اسلامی معاشرہ قائم کرکے پوری دنیا کیلئے ایک مثال بنائینگے ،تعلیم کے فروغ سے قومیں ترقی کرتیں ہیں لیکن ہمارے حکمرانوں نے تعلیم کاحصول بھی ملک میں ناممکن بنا دیا ، وزیربناتھا تو سب سے پہلے دسویں تک تعلیم مفت کردیا تھا اب موقع ملا تو ملک ایجوکیشن فری سٹیٹ بنائینگے،ملک میں حکومت پر کرپٹ مافیا اور بین الاقوامی اسٹیبلشمنٹ کے ایجنٹوں کا قبضہ ہے ،مختلف قوموں نے اپنی زبانوں میں تعلیم حاصل کرکے ترقی کی حاصل کی لیکن ہمارے بزدل حکمرانوں نے اپنی نئی نسل کو اپنی قومی زبان سے محروم رکھا ، اور بے روزگاری اور منشیات جیسے تحفے دئے،ہمارے پاس وسائل میں کمی نہیں ،یہاں کرپشن کی وجہ سے پورا معاشرہ بدحال ہے ،کرپشن کرنے والے چند ہزارافراد کو جیلوں میں ڈال کر معاشرے کو تعلیم یافتہ اور پرسکون بنائینگے ان خیالات کا اظہار انہوں نے پردہ باغ پشاور میں اسلامی جمعیت طلباءکے زیر اہتمام خیبرسٹوڈنٹس کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے کیا اس موقع پر امیر جماعت اسلامی خیبرپختونخوا مشتاق احمد خان ،ناظم اعلیٰ اسلامی جمعیت طلباءمیاں سید سہیب الدین کاکا خیل ،ناظم صوبہ شاہکار عزیز،سابق وزیر خوراک وایکسائز اینڈ ٹیکسیشن فضل ربانی ایڈوکیٹ نے بھی خطاب کیا امیر جماعت اسلامی سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ آج خیبرپختونخوا کے طلباءیہاں جمع ہیں اور 5فیصد بجٹ و یونیورسٹیاں مانگتے ہیں ہم اگر حکومت میں آئے تو پہلے صرف دسویں تک تعلیم فری کیا تھا اور اب تعلیم عام کرینگے اور مفت تعلیم کا حصول ممکن بنائینگے انہوں نے کہا کہ ہر بچے کے تعلیم کے اخراجات حکومت برداشت کریگی،انہوں نے کہا کہ نااہل حکمرانوں کی وجہ سے تعلیم سمیت دیگرسہولیات سے بھی شہری محروم ہیں اور تعلیمی اداروں میں اپنی کرپشن چھپانے کی ڈر سے طلباءیونین پر پابندی عائد کررکھی ہے انہوں نے کہا کہ ہم طلباءکو انکے بنیادی سہولیات دینگے اور تعلیم کے حصول میں کسی بھی رکاوٹ پر کمپرومائز نہیں کرینگے ہم ایک نظام تعلیم متعارف کرائینگے اور انشاءاللہ یہ پوری دنیا کیلئے ایک مثال ہوگاانہوں نے کہا کہ جماعت اسلامی نے اےم اےم دور مےں مےٹرک تک مفت تعلےم رائج کےا انھوںنے کہدوسروں کی بجائے ہمےںخود آئندہ نسلوں کے لئے منصوبی بندی کی ضرورت ہے ،ہمارے نوجوان تعلیم حاصل کرکے بیرونی ممالک جاتے ہیں اور وہاں اپنی ساری زندگیاں کھپادیتے ہیں لیکن انشاءاللہ آپ لوگوں نے ساتھ دیااور اللہ نے چاہا تو آنے والے وقت میں پھر ہمارے نوجوان باہر جاکر تعلیم حاصل نہیں کرینگے باہر سے لوگ یہاں آکر وہ تعلیم حاصل کرینگے ہم اس ملک کو ایجوکیشن فری ملک بنائینگے اور دفاع کے بعد سب زیادہ بجٹ تعلیم پر ہی خرچ کرینگے،انہوں نے کہا کہ بدقسمتی سے ہمارے ملک پر عالمی اسٹیبلشمٹ کے ایجنٹوں کا ایک طبقہ مسلط رہاہے اور کبھی ایک نام سے اور کھبی دوسرے نام سے اس ملک پر حکمرانی کرتے رہے اس وجہ سے یہاں نوجوان تعلیم جیسے بنیادی سہولت سے محروم ہیں اور ہمارے نوجوان نشے کی لعنت میں مبتلا،ءہیں اور اسکی وجہ یہی ہمارے حکمران ہیں ،انہوں نے کہا کہ ہمارے ہاں ترقی کے مواقع ہیں اور ہر فیلڈ میں ہم پوری دنیاسے آگے جاسکتے ہیں لیکن اسکیلئے دیرپااور مستقل ومنظم منصوبہ بندی کی ضرورت ہے، انھوں نے کہا کہ اس سلسلے میں ہم نے اٹھ سو پی اےچ ڈی ڈاکٹرزکے ساتھ رابط کےا ہے تاکہ ملک کے ترقی کے لئے منصوبہ بندی کی جاسکی اور یہ منصوبہ بندی مستقل اور دیرپا ہو۔ انہوں نے کہا کہ ہماری حکومت مےں ملک مےں تعلےم مفت ہوگئی۔ نجی سکولوں مےں پڑھنے والے بچوں کی فےس حکومت ادا کرے گی۔ ملک مےں انصاف اور علاج مفت ہوگا۔ بے روزگار نوجوانوں کو روزگار ملنے تک رےاست بے روزگار الاو¿نس دے گی۔ ستر سال سے زائد عمر کے لوگوں کو بڑھاپا الاو¿نس دےا جائے گا۔ لوٹی گئی اس ملک و قوم کی رقم کو واپس لاکر وہی رقم اس ملک کے لوگوں پر خرچ کرےں گے۔ ےہ ملک تےس سال تک ٹےکس فری ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ نواز شرےف کی کرپشن ختم ہوچکی ہے اور مصنوعی لےڈر شپ جو مےڈےا کو خرےد کر ہر وقت ٹی وی پر نظر آرہی ہے، یہ بھی ختم ہونے والی ہے۔ اس وقت ملک کے اےوانوں مےں چور اور لٹےرے بےٹھے ہےں اور ہم چاہتے ہےں کہ ان اےوانوں مےں مزدور، غرےب لوگ آئےں جو چوری کرنے کی بجائے عوام کی بے لوث خدمت کرےں۔ ان اےوانوں مےں بےٹھے جاگےرداروں نے اس ملک کو بے روزگاری، غربت، لوڈ شےڈنگ اور احساس محرومی کے تحفے دئے ہےں۔ انہوں نے کہا کہ ہم ملک مےں بلا تفرےق احتساب چاہتے ہےں۔ ملک لوٹنے والوں کا، لےنڈ مافےا کا، شوگر مافےا کا، ڈرگ مافےا کا احتساب جب تک نہےں ہوگا ےہ ملک ترقی نہےں کر سکے گا۔

Scroll To Top