ساہیوال کول پراجیکٹ آدھے پنجاب کو ٹی بی کا مریض بنا دے گا،خورشید شاہ

khursheed-shah-1پانچ سال بعد واپڈا حکام ہاتھ جوڑیں گے تب بھی عوام بجلی نہیں لیں گے، چیرمین پبلک اکاؤنٹس کمیٹی۔ فوٹو: فائل 


اسلام آباد: پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کے چیرمین خورشید شاہ نے کہا ہے کہ ساہیوال پراجیکٹ آدھے پنجاب کو ٹی بی کا مریض بنا دے گا اور کوئلے کے دھوئیں سے لوگ مریں گے تو قتل کا مقدمہ تو بنے گا۔

اسلام آباد میں چیرمین خورشید شاہ کی زیر صدارت پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کا اجلاس ہوا جس میں بجلی کے شعبے میں مجموعی نقصانات اور چوری کا جائزہ لیا گیا۔

چیرمین کمیٹی خورشید شاہ نے کہا کہ جس دن بجلی کی درست قیمت وصول کی گئی بجلی کی چوری ختم ہو جائے گی، واپڈا یہ بات سوچے کہ بجلی کی چوری کیوں ہو رہی ہے، اگر ایک روپے کی جگہ پانچ روپے قیمت وصول کریں گے تو چوریاں تو ہوں گی، دیہاتوں میں بجلی چوری کی وجہ ہی اوور بلنگ ہے، پانچ سال بعد پی ٹی سی ایل کی طرح آپ بھی گھر گھر جا کر عوام کی منت کریں گے کہ بجلی لے لو لیکن لوگ بجلی نہیں لیں گے بلکہ سولر پر آجائیں گے۔

خورشید شاہ نے فضائی آلودگی پھیلانے کے باعث ساہیوال کوئلہ پراجیکٹ کو بند کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ یہ پراجیکٹ حکومت کے خلاف دفعہ 302 کا کیس ہے جو آدھے پنجاب کو ٹی بی کا مریض بنا دے گا اور اگر لوگ دھوئیں سے مریں گے تو قتل کا مقدمہ تو بنے گا۔

کمیٹی کے رکن نوید قمر نے کہا کہ صارفین کو اوربلنگ کی جارہی ہے اور 90 فیصد بل بغیر ریڈنگ کے بھیجے جاررہے ہیں جبکہ صارفین کو ایوریج فارمولہ لگا کر بل بھیج دیا جاتا ہے۔ کمیٹی کے رکن شفقت محمود کا کہنا تھا کہ بل آخری تاریخ سے ایک روز قبل گھروں میں پھینکا جاتا ہے اور مجھے بھی اکثر ایک دن قبل بل موصول ہوتا ہے۔

اجلاس میں سیکرٹری وزارت توانائی یوسف نسیم کھوکھر نے صارفین کو درپیش مشکلات کا اعتراف کرتے ہوئے کہا کہ سب اچھا نہیں چل رہا، بجلی کی اووربلنگ ہورہی ہے اور بل تاخیر سے بھیجے جاتے ہیں، صارفین کی شکایات کے ازالے کا مؤثر نظام تین ماہ میں فعال ہوجائے گا۔

Scroll To Top