پاکستان جغرافیہ کا نہیں ایک نظریے کا نام ہے‘ سراج الحق

  • اسلام کے نام پر بننے والے ملک میں ابھی تک اسلامی نظام نافذ نہیں ہو سکا ہے
پشاور‘ امیر جماعت اسلامی سراج الحق علماءکنونشن سے خطاب کر رہے ہیں

پشاور‘ امیر جماعت اسلامی سراج الحق علماءکنونشن سے خطاب کر رہے ہیں

پشاور(صباح نیوز)جماعت اسلامی کے مرکزی امیر سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ پاکستان جغرافیہ کا نہیں ایک نظریے کا نام ہے اور اسلام کے نام پر بننے والے ملک میں اب تک اسلامی نظام نافذ نہ ہو سکا جبکہ پاکستان کے 99فیصد لوگ انصاف سے محروم چلے آرہے ہیں ۔پشاور میں علماءکنونشن سے خطاب کرتے ہوئے جماعت اسلامی کے مرکزی امیر سراج الحق نے کہا کہ حکمرانوں نے ہمیشہ بین الاقوامی اسٹیبلشمنٹ کا ساتھ دیا ہے جس کی وجہ سے مسائل پیدا ہوئے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ انسان پر انسانوں کی حکمرانی والی سیاست پر وہ لعنت بھیجتے ہیں ۔ملک میں سیاست ،جمہوریت اور عوام یرغمال ہیں ۔انہوں نے کہا کہ حکمرانوں نے مشرقی پاکستان کو بنگلہ دیش بنا دیا ۔اسی طرح راتوں رات ختم نبوت کے قانون پر شب خون مارا گیا اور بعد ازاں جماعت اسلامی کی تجویز پر ترمیم واپس لینے کا کہا گیا ۔انہوں نے کہا کہ ہم نے واضح کیا ہے کہ اس کے ذمہ داروں کو سزا ملنی چاہیے ۔ہم صرف وعدے نہیں مانتے ۔سراج الحق نے کہا کہ اس کی تحقیقات کےلئے کمیشن اور پارلیمانی کمیٹی قائم کی جائے ۔انہوں نے کہا کہ ملک کرپشن کے دلدل میں پھنس چکا ہے جبکہ حکمرانوں کا قبلہ واشنگٹن کی طرف ہے ۔اسی طرح زرداری لوگوں سے ووٹ مانگنے کےلئے پشاور آئے ہیں حالانکہ اسی عوام نے ان کو کرسی پر بٹھایا تھا اور انہوں نے عوام کے لئے کچھ نہیں کیا ۔انہوں نے کہا کہ جماعت اسلامی ملک میں اسلامی انقلاب برپا کر کے عوام کے مسائل کو انصاف پر مبنی نظام کے ذریعے حل کرے گی ۔

Scroll To Top