سسٹم میں تمام تر کمزوریوں کو فوری دور کیا جائیگا، پرویز خٹک

  • غریب مریضوں کو مقامی سطح پر طبی سہولیات فراہم کرنے کے بجائے دوسرے ہسپتالوں پر بوجھ ڈالا جا رہا ہے، وزیر اعلی خیبرپختونخوا
  • ریفرل سسٹم کی کمزوریاں دور کرکے مضبوط کرنے کی ضرورت ہے، حکومت وسائل فراہم کریگی
پشاور‘وزیر اعلیٰ خیبر پختونخواہ پرویز خٹک ہیلتھ سیکٹرز کی کارکردگی اجلاس کی صدارت کر رہے ہیں

پشاور‘وزیر اعلیٰ خیبر پختونخواہ پرویز خٹک ہیلتھ سیکٹرز کی کارکردگی اجلاس کی صدارت کر رہے ہیں

پشاور(این این آئی)وزیر اعلیٰ خیبر پختونخواہ پرویز خٹک نے سرکاری ہسپتالوں میں موجودہ ریفرل سسٹم پر عدم اطمینان کا اظہار کیا ہے اور سسٹم میں تمام تر کمزوریوں کو فوری طور پر دور کرنے کی ہدایت کی ہے وہ وزیراعلیٰ سیکرٹریٹ پشاور میں مختلف طبی مراکز کی اپ گریڈیشن، طبی سہولیات کو بہتر کرنے، اور مقامی ہیلتھ کئیر سنٹرز میں غریب عوام کی شکایات کا ازالہ کرنے کے حوالے سے اعلیٰ سطح اجلاس کی صدارت کر رہے تھے ۔ سیکرٹری صحت عابد مجید اور دیگر متعلقہ حکام نے اجلاس میں شرکت کی۔ وزیراعلیٰ نے موجودہ ریفرل سسٹم کو ناکارہ اور اندھا قرار دیتے ہوئے کہا کہ ایسا لگتا ہے کہ مقامی سطح پر ہیلتھ کئیر کے اپ گریڈڈ سسٹم میں استعدادموجود ہونے کے باوجود غریب مریضوں کو مقامی سطح پر طبی سہولیات فراہم کرنے کے بجائے دوسرے ہسپتالوں پر بوجھ ڈالا جا رہا ہے۔ ریفرل سسٹم کی کمزوریاں دور کرکے مضبوط کرنے کی ضرورت ہے۔ پرویز خٹک نے جلوزئی میں بی ایچ یو اور آر ایچ سی کی اپ گریڈیشن سے اتفاق کیاتا ہم رورل ہیلتھ سنٹر اسی دستیاب جگہ پر تعمیر کیا جائے گا جس کا پی سی ون تیار ہے۔ وزیراعلیٰ نے اس کی فیز بیلٹی تیار کرنے کی ہدایت کی۔ انہوں نے رورل ہیلتھ سنٹر سپین ڈاگ اور پہلے سے منتخب دستیاب اراضی پر ازاخیل بالا ہسپتال کی تعمیر کے احکامات بھی جاری کئے انہوں نے تحٹ بھائی ہسپتال میں ملازمین کی منتقلی کی ہدایت کی اور تنبیہ کی ڈیٹیلمنٹ کلچر کی حوصلہ شکنی کی جائے۔ انہوں نے یقین دلایا کہ حکومت وسائل فراہم کریگی۔ تا ہم وزیراعلیٰ نے کہا کہ ضلعی حکومت کو شعبہ صحت کے وسائل کا اپنا حصہ ڈسٹرکٹ ہیلتھ کئیر سسٹم کو اپگریڈ کرنے کے عمل میں ڈالنا چاہئے یہ ماڈل ضلع نوشہرہ میں پہلے سے موجود ہے جس کے تحت ضلع کے اندر مختلف طبی اور صحت کے مراکز کی اپگریڈیشن کیلئے وسائل مہیا کئے جا رہے ہیں۔

Scroll To Top