اگر حضرت عمر(رضی اللہ عنہ) ہوتے۔۔۔۔31-03-2012

kal-ki-baatمیں کل ہی اس خبر پر خیال آرائی کرنا چاہتا تھا مگر ذہن اس خبر کی ” صحت“ اور ” صداقت “ پر یقین کرنے کے لئے تیار نہ تھا۔
یہ کیسے ممکن ہے کہ گیلانی اور زرداری جیسے نام صوبہ پنجاب کے نصاب میں جگہ پالیں ' اور اس انداز میں پائیں کہ ان ناموں اور اللہ تعالیٰ کے ناموں کے درمیان کوئی فرق ہی نہ سمجھاجائے۔ ؟
یہ سوال کل تک میرے ذہن میں تھا۔ اب نہیں ہے۔ یقین آگیا ہے کہ ایسا ہی ہوا ہے۔
نویں جماعت کے طلباءو طالبات سے پوچھا گیا ہے :
بتاﺅ کہ نظا م زندگی کس پر قائم ہے (1)دین پر (2)دُنیا پر (3)دولت پر یا(4)صدر زرداری پر ۔
صرف یہی نہیں ان طلبااور طالبات سے یہ بھی پوچھا گیا ہے:
بتاﺅ کہ پاکستان کی حفاظت کی ذمہ داری کس پر ہے (1)اللہ تعالیٰ پر (2)صدر زرداری پر یا (3)وزیراعظم گیلانی پر۔
اگر اس قسم کے سوالات سندھ میں طلباءاور طالبات سے پوچھے جاتے تو اسے نالائقی نا اہلی اور غفلت کے ایک شرمناک مظاہرے کے ساتھ ساتھ سیاسی پروپیگنڈے کی ایک بھونڈی کوشش بھی کہا جاسکتا تھا۔ میں نے سنا ہے کہ خیبر پختون خواہ میں نصاب سے قائداعظم(رحمتہ اللہ علیہ) کا نام آہستہ آہستہ غائب ہورہا ہے اور ان کی جگہ باچا خان لے رہے ہیں۔ مگر وہ معاملہ اور ہے۔
یہ معاملہ تو ذمہ داران کو اوندھا ڈال کر دُروّں کی بارش کرنے کا ہے۔ اگر حضرت عمر فاروق(رضی اللہ عنہ) ہوتے تو خود خادمِ اعلیٰ کی خیر نہیں تھی۔

Scroll To Top