امریکی پابندیاں دہشتگردی کیخلاف جنگ کو خطرے میں ڈال سکتی ہیں، وزیراعظم

  • پاکستان کی فوجی امداد میں کمی کر کے امریکا دہشت گردوں کو فائدہ پہنچائے گا، وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کا پیغام
  • موجودہ حالات میں مل جل کر کام کرنے کی ضرورت ہے،افغانستان میں مقیم دہشتگرد سرحد پار کارروائیاں کرتے ہیں
اسلام آباد: وزیراعظم پاکستان شاہد خاقان عباسی پاکستان فارما سیوٹیکل کے اجلاس کی صدرات کر رہے ہیں

اسلام آباد: وزیراعظم پاکستان شاہد خاقان عباسی پاکستان فارما سیوٹیکل کے اجلاس کی صدرات کر رہے ہیں

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر)زیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ افغانستان میں ہر مسئلے کا الزام پاکستان پر لگانا ٹھیک نہیں، موجودہ حالات میں مل جل کر کام کرنے کی ضرورت ہے، افغانستان میں مقیم دہشتگرد سرحد پار کارروائیاں کرتے ہیں، چین کیساتھ معاشی اور عسکری تعلقات 60 کی دہائی سے قائم ہیں۔انکا کہنا تھا کہ ہم دہشتگردی کیخلاف جنگ لڑ رہے ہیں، پاکستان کی فوجی امداد میں کمی کر کے امریکا دہشت گردوں کو فائدہ پہنچائے گا، امریکی پابندیاں دہشتگردی کیخلاف جنگ کو خطرے میں ڈال سکتی ہیں۔دریں اثناءوزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کہاہے کہ حکومت ملک کے عوام کی سماجی و اقتصادی ترقی کے لئے ہر ممکنہ کاوش بروئے کار لارہی ہے ، ارکان پارلیمان اپنے حلقوں میں جاری ترقیاتی منصوبوں کی بروقت تکمیل کو یقینی بنائیں ۔وہ ساہیوال ڈویژن سے تعلق رکھنے والے مسلم لیگ (ن) کے ارکان قومی اسمبلی سے گفتگو کررہے تھے جنہوںنے پیر کووزیر اعظم آفس میںان سے ملاقات کی اور اپنے اپنے حلقوں میں ترقیاتی منصوبوں اور دیگر امور کے بارے میں تبادلہ خیال کیا۔ وزیر اعظم نے منتخب نمائندوں پر زور دیاکہ وہ عوام سے قریبی رابطہ استوار رکھتے ہوئے ان کے مسائل کو اجاگر اور حل کرنے کےلئے اپنا کردار ادا کریں ۔ وزیر اعظم سے ملاقات کرنے والے ارکان قومی اسمبلی میں ندیم عباس ربیرا ، چوہدری ریاض الحق، سید محمد عاشق حسین شاہ، راﺅ محمد اجمل خان، محمدمعین وٹو، سید عمران احمدشاہ ، چوہدری محمداشرف، چوہدری محمد طفیل ،چوہدری محمد منیر اظہر ، سردار منصب علی ڈوگر، سید محمد اطہر حسین شاہ جیلانی اور رانا زاہد حسین شامل تھے۔ ملاقات میں وزیر پارلیمانی امور شیخ آفتاب بھی موجود تھے۔

Scroll To Top