کوئٹہ‘ سیکیورٹی فورسز پر خودکش حملہ،8جوانوں سمیت 17افراد شہید

Pic12-116 QUETTA: Aug 12 – Blaze at the site of powerful bomb went off near an army truck. At least 15 people, including eight security personnel, were killed and scores were wounded when a powerful bomb went off near an army truck in near Mehdi Hospital at Pishin Stop. The death toll is feared to go up as some of those injured are said to be in critical condition. ONLINE PHOTO by Ahmed Kakar

QUETTA: Aug 12 – Blaze at the site of powerful bomb went off near an army truck. At least 15 people, including eight security personnel, were killed and scores were wounded when a powerful bomb went off near an army truck in near Mehdi Hospital at Pishin Stop. The death toll is feared to go up as some of those injured are said to be in critical condition. ONLINE PHOTO by Ahmed Kakar

  • دھماکے سے گاڑیوں میں آگ بھڑک اٹھی ، 2گاڑیاں،4رکشے اور 2موٹرسائیکل مکمل طور پر تباہ،سیکورٹی فورسز کی گاڑی کو نشانہ بنایا ،بم ڈسپوزل کے عملے ا ور پولیس نے ابتدائی تحقیقات شروع کردی ہیں،سرفرازبگٹی
  • زخمیوں کو ہسپتال منتقل کردیا گیا،کوئٹہ کے تمام اسپتالوں میں ایمرجنسی نافذ کردی گئی ہے‘ دھماکا بہت بڑا تھا جس کے باعث آگ لگ گئی، زخمیوں کو اسپتال منتقل کیا جارہا ہے،وزیر داخلہ بلوچستان سرفراز بگٹی

کوئٹہ(صباح نیوز) بلوچستان کے دارالحکومت کوئٹہ میں دھماکے کے ذریعے سیکورٹی فورسز کی گاڑی کا نشانہ بنایا گیا جس کے نتیجے میں اب تک 17 افراد شہید جبکہ 27 سے زائد زخمی ہوچکے ہیں۔وزیر داخلہ بلوچستان سرفراز بگٹی نے کہا کہ دھماکا بہت بڑا تھا جس کے باعث آگ لگ گئی، زخمیوں کو اسپتال منتقل کیا جارہا ہے۔تفصیلات کے مطابق ہفتہ کی رات پشین روڈ پرپشین اسٹاپ کے قریب دھماکہ ہوا جس میں 17 افراد جاںبحق ہوگئے جبکہ 27 افراد زخمی ہو ئے۔ دھماکے کے ذریعے سیکورٹی فورسز کی گاڑی کا نشانہ بنایا گیا ،دھماکہ سے کئی گاڑیوں میں آگ لگ گئی۔زخمیوں کو ہسپتال منتقل کردیا گیا۔کوئٹہ کے تمام اسپتالوں میں ایمرجنسی نافذ کردی گئی ہے۔دھماکہ کے باعث کئی گاڑیوں میں آگ لگ گئی۔ وزیر داخلہ بلوچستان سرفراز بگٹی نے کہا ہے کہ دھماکا بہت بڑا تھا جس کے باعث آگ لگ گئی، زخمیوں کو اسپتال منتقل کیا جارہا ہے۔انہوں نے بتایا کہ دھماکے کے ذریعے سیکیورٹی فورسز کی گاڑی کو نشانہ بنایا گیا جبکہ اس کی نوعیت تاحال واضح نہیں ہوسکی۔ہسپتال ذرائع کے مطابق زخمیوں میں سے 8 سے 9 افراد کی حالت تشویشناک ہے جنہیں طبی امداد دی جارہی ہے۔آگ لگنے والی گاڑیوں میں دو گاڑیاں، چار رکشے اور دو موٹر سائیکلیں شامل ہیں۔ دھماکے کے نتیجے میں ہلاکتوں کی تعداد بڑھنے کا خدشہ ظاہر کیا جارہا ہے۔کوئٹہ کے تمام اسپتالوں میں ایمرجنسی نافذ کردی گئی ہے۔ریسکیو ذرائع کے مطابق فائر بریگیڈ کی 3 گاڑیاں آگ بجھانے میں مصروف ہیں۔زخمیوں کو اسپتال پہنچایا جارہا ہے جبکہ سیکیورٹی اداروں نے جائے وقوعہ کو گھیرے میں لے لیا ہے۔دوسری جانب وزیراعظم پاکستان شاہد خاقان عباسی ،صدر مملکت ممنون حسین اور وزیر داخلہ بلوچستان نے کوئٹہ دھماکے کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے۔

Scroll To Top