پھولوں سے مؤثر ترین سن بلاک بنانے کی راہ ہموار

hڈاکٹر گسٹاو زونیکا انٹارکٹک کے جادوئی پھول کے ساتھ جبکہ چھوٹی تصویر میں پرل ورٹ پھول نظر آرہا ہے۔ فوٹو: رائٹرز

سان تیاگو: انٹارکٹیکا کے دور دراز اور سرد ترین علاقوں سے دو پھول دریافت ہوئے ہیں جن کے مالیکیولز سے دنیا کا بہترین سن بلاک بنایا جا سکتا ہے۔

چِلی کے ماہرین نے ان دو پھولوں میں ایسے سالمات دیکھے ہیں جو نہ صرف سورج کی تپش سے پھولوں کو بچاتے ہیں بلکہ ان سے انسانی سن بلاک بنا کر نازک جلد کو بھی محفوظ بنایا جا سکتا ہے۔

یونیورسٹی آف سان تیاگو کے ماہرین نے کنٹرول صورتحال میں پرل ورٹ اور ہیئر گراس پھولوں کا مطالعہ کیا تو معلوم ہوا کہ وہ انتہائی مضر بالائے بنفشی ( الٹرا وائلٹ) شعاعوں کو برداشت کر کے اپنی افزائش جاری رکھتے ہیں۔

ماہرین کے مطابق سائنسدانوں نے ان پھولوں میں کئی سالمات دریافت کئے ہیں جن میں موجود کولوبانتھوس ایک سولر فلٹر کا کام کرتے ہوئے سورج کی مضر شعاعوں کو روکتا ہے۔ یہ تحقیق گسٹاو زونیگا کے زیرِنگرانی کی گئی ہے اور اب وہ تجارتی کمپنی کے ذریعے مختلف مصنوعات بنانے پر غور کر رہے ہیں۔

اس کے علاوہ ان پھولوں کے جِین دیگر فصلوں میں شامل کر کے انہیں سورج کی تباہی سے بچانے میں مدد مل سکے گی جبکہ پھولوں کے مالیکیولز سے میک اپ کا سامان بنانا بھی ممکن ہو سکے گا۔

Scroll To Top