جالوت کو زیر کرنے والے داﺅد ؑ۔۔۔۔۔

aaj-ki-baat-new-21-aprilجالوت کو زیر کرنے والے داﺅد ؑ۔۔۔۔۔

(You are man of the moment Arshad Sharif !)

جس شخص کے عزمِ راسخ ` مصّمم ارادے اور ناقابلِ تسخیر قوتِ عمل کی یہ ایک تاریخ ساز فتح ہے اس کا نام بہرحال عمران خان ہے۔۔۔ وہ لوگ جو اس ” جنونی “ کی سیاسی بصیرت کے بارے میں زیادہ مثبت رائے نہیں رکھتے وہ بھی یہ اعتراف کرنے پر مجبور ہوگئے ہیں کہ اگر عمران خان طبلِ جنگ نہ بجاتے اور کرپشن کے خلاف اپنے وسائل سمیت میدانِ کارزار میں نہ اترتے تو جو معجزہ 10جولائی 2017ءکو رونما ہوا وہ کبھی وطنِ عزیز کی تاریخ میں ایک عہدساز باب کے حرفِ اول کا درجہ اختیار نہ کرتا۔۔۔لیکن اس معجزے کو ایک ناقابلِ تردید حقیقت کا درجہ دینے میں ” جے آئی ٹی “ کے اُن اراکینِ بلند عزم و بلند کردار کا کلیدی حصہ ہے جنہیں نہ تو دھمکایا جاسکا ` نہ ڈرایا جاسکا ` نہ جُھکایا جاسکا اور نہ ہی خریدا جاسکا۔۔۔
میں نے 10جولائی 2017ءکو رونما ہونے والے معجزے کو معجزہ اس لئے کہا ہے کہ کچھ عرصہ پہلے تک کسی کو امید ہی نہ تھی کہ وطنِ عزیز پر قابض ” جالوتی“ قوتوں کو صرف نہ یہ کہ اس انداز میں للکاراجاسکتاہے بلکہ زیر بھی کیا جاسکتا ہے۔۔۔ آپ جانتے ہیں کہ جالوت کون تھا۔۔۔اس طاغوتی لشکّر کا دیوقامت اور ناقابلِ شکست نظر آنے والا سالار جس کا مقابلہ کرنے کے لئے طالوت نکلے تھے۔۔۔ جالوت(Goliath)کو نشانِ عبرت بنا ڈالنے کا اعزاز قدرت نے حضرت داﺅد ؑ کے مقدر میں لکھا تھا۔۔۔
مگر جس جالوت کے شکنجے میں وطنِ عزیز برسہا برس سے کسا رہا ہے اسے زیر کرنے کا اعزاز کسی ایک فرد کو بہرحال نہیں دیا جاسکتا۔۔۔
میں یہاں میڈیا کے ان عظیم فرزندوں کو بھی خراج تحسین پیش کرتا ہوں جنہوں نے یہ جنگ یوں لڑی ہے جیسے وہ وطنِ عزیز کی بقاءکی جنگ لڑرہے ہوں۔۔۔ پانچ نام اس ضمن میں بے اختیار میرے ذہن میں ابھر رہے ہیں۔۔۔ ارشد شریف ` رﺅف کلاسرا ` سمیع ابراہیم ` کاشف عباسی او ر ڈاکٹر شاہد مسعود۔۔۔
نام اور بھی بہت ہیں۔۔۔
عارف حمید بھٹی کا نام ہے۔۔۔ عامر متین کا نام ہے۔۔۔ اسد کھرل کا نام ہے۔۔۔ آغا ہلالی کا نام ہے۔۔۔ اور سب سے بڑھ کر ارشاد احمد عارف کا نام ہے۔۔۔
میڈیا کے اُن سپوتوں سے میں معذرت خواہ ہوں جن کے نام اس وقت میرے ذہن میں نہیں آرہے مگر جو نہ تو دھمکائے جاسکے نہ خریدے جاسکے اور نہ جُھکائے جاسکے۔۔۔
(You are man of the moment Arshad Sharif !)

Scroll To Top