کلبھوشن معاملہ، عالمی عدالت انصاف کا فیصلہ بڑا دھچکا ہے، خورشید شاہ

وزیر اعظم اپنی آئینی ذمہ داری پوری کریں ورنہ قوم معاف نہیں کرے گی،اپوزیشن لیڈر کی صحافیوں سے گفتگو

سید خورشید شاہاسلام آباد(آن لائن)قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف سید خورشید شاہ نے کہا ہے کہ کلبھوشن یادیو کے معاملے پر عالمی عدالت انصاف کا فیصلہ ہمارے لئے سیٹ بیک ہے۔ وزیر خارجہ کی تعیناتی اور اٹارنی جنرل یہ کیس پیش کرتا تو نتائج مختلف ہوتے۔ وزیر اعظم اپنی آئینی ذمہ داری پوری کریں ورنہ قوم ان کو معاف نہیں کرے گی ۔انہوں نے ان خیالات کا اظہار جمعے کو یہاں صحافیوں سے گفتگو میں کیا ۔خورشید شاہ نے کہا کہ عالمی عدالت انصاف کا کلبھوشن معاملے پر فیصلہ نواز حکومت کی ناکامی کا منہ بولتا ثبوت ہے اور اس کیس میں مزید پیش رفت کے حوالے سے اب شکوک و شبہات بڑھ گئے ہیں جو لمحہ فکریہ ہے ۔قائد حزب اختلاف نے کہا کہ وزیر خارجہ کا عہدہ وزیر اعظم نے اپنے پاس رکھا ہے اور یہی وجہ ہے کہ ہم عالمی تعلقات اور سفارتی محاذ پر مار کھاتے جارہے ہیں۔ مستقل وزیر خارجہ کی تعیناتی ہوتی اور کلبھوشن کا کیس کسی ناتجربہ کار کے بجائے اٹارنی جنرل پیش کرتا تو اس کے نتائج مختلف ہوتے انہوں نے کہا کہ کلبھوشن کا معاملہ قوم کی بقاءکا معاملہ ہے اور قوم کی ترجمانی کیلئے وزیر اعظم نواز شریف کو اپنی آئینی ذمد داری پوری کرنی چائیے ورنہ اس معاملے پر 20کروڑ پاکستانی عوام اپنا فیصلہ دے کر ان کو معاف نہیں کرے گی۔خورشید شاہ نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ سجن جندال پاکستان آئے لیکن حکومت نے اس کا دورہ خفیہ رکھا اور نواز شریف سمیت ان کے ترجمان نے اس حوالے سے کوئی بات نہیں کی جو حکومت کے وژن اور قومی معاملات کو احسن انداز میں چلانے کی صداحیت پر سوالیہ نشان ہے۔

Scroll To Top