مری سے ہیگ تک ٹریک 2 ڈپلومیسی کا سفر پاک فوج کا مجرم ہے `فوج ہی فیصلہ کرے

aaj-ki-baat-new-21-aprilسجن جندال کے اچانک اور پُراسرار دورے کے بعد ہر بات ” فاسٹ فارورڈ“ ہوئی ہے۔ بھارت کلبھوشن یادیو کی سزائے موت رکوانے کے لئے عالمی عدالت پہنچا جس کا ایک جج بھارتی ہندو ہے۔ پاکستان نے عالمی عدالت میں یہ موقف اختیار کیا کہ یہ کیس عالمی عدالت کے دائرہ اختیار (Jurisdiction) میں نہیں آتا کیوں کہ کلبھوشن ایک جاسوس ہے جس نے پاکستان میں دہشت گردی کا نیٹ ورک قائم کررکھا تھا اور جنیوا کنونشن کا اس معاملے میں اطلاق نہیں ہوتا۔ یہ موقف درست تھا مگر اس کے ساتھ ضروری بات یہ تھی کہ کلبھوشن کو دہشت گرداور جاسوس ثابت کرنے کے لئے ٹھوس شواہد دیئے جاتے۔ بادی النظر میں ایسا لگتا ہے کہ پاکستان کا مقدمہ لڑنے والے وکیلوں کے دھواں دار انداز کے باوجود سارا معاملہ اُس بیک چینل ڈپلومیسی کے مطابق نمٹایا گیا جو مری کی پہاڑیوں میں میاں نوازشریف اور جندال کے درمیان ہوئی تھی۔

عالمی عدالت نے اگرچہ فیصلہ گول مول انداز میں دیا ہے مگر بھارت جو دو ” ریلیف“ مانگ رہا تھا وہ اسے دے دیئے گئے ہیں۔ ایک تو یہ کہ کلبھوشن یادیو کو پھانسی عالمی عدالت کے فیصلے سے پہلے نہیں دی جائے گی۔اور دوسرا یہ کہ کلبھوشن یادیو تک بھارتی قونصلر کو رسائی دی جائے گی۔
مجھے ڈر ہے کہ نون لیگ کی حکومت کہیں مٹھائیاں کھانے اور بانٹنے پر نہ لگ جائے۔ یہ ڈر اِس لئے ہے کہ میاں نوازشریف نے شروع سے ہی جو رویہ اختیار کررکھا ہے اس سے یہ تاثر نہیں ملتا کہ وہ کلبھوشن یادیو کو کیفر کردار تک پہنچتے دیکھنا چاہتے ہیں۔ وہ ملک کے وزیراعظم ہونے کے ساتھ ساتھ وزیر خارجہ بھی ہیں مگر وزارت خارجہ انہوں نے اپنے ” پیاروں ‘ ‘کے سپرد کررکھی ہے۔
مجھے یقین ہے کہ میاں صاحب دل ہی دل میں کلبھوشن یادیو کو سخت برا بھلا کہتے ہوں گے کہ ” بے وقوف تمہیں گرفتار ہونے کے لئے اِسی وقت کا انتخاب کرنا تھا جب میں مودی جی سے پینگیں بڑھا رہا تھا۔۔۔؟“
بہرحال ہماری فوج کو ایک زبردست چیلنج کا سامنا ہے۔ کلبھوشن یادیو کا معاملہ میاں صاحب اور جندال کی ٹریک 2ڈپلومیسی کے بھینٹ نہیں چڑھنا چاہئے۔
مجھے یقین ہے کہ مجھ سے یا دوسرے تجزیہ کاروں سے بہتر فوج جانتی ہوگی کہ ہماری حکمت عملی اب کیا ہونی چاہئے۔
اس معاملے کی وجہ سے ایک ایسی روایت بھی پڑی ہے جس پر بھارت کو کبھی خوشی نہیں ہوگی۔
ہم کشمیر میں جاری بربریت کے درجنوں معاملات عالمی عدالت لے جاسکتے ہیں۔ پہل بھارت نے کردی ہے۔

Scroll To Top